شادی کے بعد دلہن کے مرد ہونے کا انکشاف


یوگنڈا میں مقامی مسجد کے امام نے شادی کی لیکن شادی کے 2 ہفتے بعد انکشاف ہوا کہ اس کی دلہن خاتون نہیں بلکہ مرد ہے۔

بین الاقوامی میڈیا کے مطابق یوگنڈا کے ضلع کیونگا میں واقع مسجد کے امام محمد موطمبیٰ نے ثواب اللہ نابوکیرا نامی خاتون سے شادی کی لیکن اس وقت فراڈ دلہن کا بھانڈہ پھوٹ گیا جب پولیس نے امام کے گھر سے چوری کے الزام میں اسے گرفتار کر کے مال مسروقہ برآمد کر لیا۔

پولیس کا کہنا ہے کہ ’ نابوکیرا‘ کو خاتون چور سمجھ کر گرفتار کیا گیا اور حراست میں لینے کے بعد لیڈی پولیس اہلکاروں کے حوالے کیا گیا کیونکہ اس نے حجاب اور سینڈل پہن رکھی تھی۔ان کے بقول جب لیڈی پولیس اہلکاروں نے دلہن کی تلاشی لی تو انکشاف ہوا کہ یہ شخص عورت نہیں مرد ہے جو خاتون کا روپ دھار کر لوگوں کی آنکھوں میں دھول جھونک رہا تھا۔

پولیس نے فوری طور پر امام کو اطلاع دی جسے سن کر وہ حیران رہ گیا جب اسے پولیس نے بتایا کہ اہلیہ دراصل ایک 27 سالہ مرد ہے ے۔

ملزم نے بتایا کہ چوری کی غرض سے اس نے امام سے شادی کی تھی اور خاتون کا روپ دھار کر اس نے سب کو دھوکا دیا، دوران تفتیش ملزم نے گھاؤنے فعل میں معاونت کرنے والی ایک رشتہ دار کا نام بھی بتایا جس نے شادی کروانے میں کردار ادا کیا تھا، پولیس نے ملزم کے بیان پر اس کی سہولت کار آنٹی کو بھی گرفتار کر لیا۔

  • This news show that Molvi of that area was also from Qoam-e-Loot like our Pakistani Molvies, even after 2 weeks of marriage he did not know that his wife is male not female so it is clear that he was doing Lavatat.


  • 24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept

    >