پاکستان میں نئی گاڑیاں مہنگی ہونے کی کیا وجہ ہے ؟ جانیئے تفصیلات

پاکستان میں نئی گاڑیاں مہنگی ہونے کی کیا وجہ ہے ؟ جانیئے تفصیلات

پاکستان کے عوام میں ایک عام رائے پائی جاتی یہاں گاڑیاں بنانے والی کمپنیز زائد منافع کماتی ہیں اس لیے یہاں گاڑیاں مہنگی ملتی ہیں کیونکہ ہمارے ہاں گاڑیاں استعمال کرنے والے عموماً قیمتوں کا موازنہ بھارت میں ملنے والی گاڑیوں سے کرتے ہیں۔

نجی چینل کے ڈیجیٹل پلیٹ فارم کی جانب سے انجینئرنگ ڈویلپمنٹ بورڈ کے جنرل منیجر عاصم ایاز سے سوال کیا گیا کہ خطے کے دیگر ممالک یا ہمارے ہمسایہ ملک بھارت میں دیکھا جائے تو گاڑیاں سستی ہیں مگر پاکستان میں کوئی بھی نئی چھوٹی سے چھوٹی گاڑی بھی10 لاکھ روپے سے کم کیوں نہیں ہے تو انہوں نے اس کی تفصیلاً وجوہات بیان کیں۔

عاصم ایاز کی جانب سے بتایا گیا کہ یہاں ملنے والی بڑی گاڑیاں کورولا، ہنڈا وغیرہ کی قیمتیں بھارت کے مقابلے یا تو برابر ہیں یا بھارت کی نسبت کم ہیں۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان میں ڈالر کی قیمت بھی بھارت کی نسبت کم ہیں۔ انہوں نے بتایا کہ جہاں زیادہ لوکلائزیشن ہو وہاں قیمتوں میں فرق ہوتا ہے۔

جی ایم ای ڈی بی عاصم ایاز نے کہا کہ بھارت میں ملنے والی چھوٹی گاڑی ماروتی کی نسبت پاکستان میں ملنے والی اسی طرح کی گاڑی کی قیمت میں زیادہ فرق ہے۔ کیونکہ بھارت میں پاکستان کی نسبت لوکلائزیشن زیادہ ہے۔ انہوں نے بتایا کہ ہمارے ملک میں ملنے والی بڑی گاڑیاں پوری دنیا کی نسبت سستی ہیں۔

انہوں نے بتایا کہ قیمتیں بڑھنے کی وجہ حکومت کی جانب سے سی کے ٹی پر عائد کیے جانے والے ٹیکسز ہیں جو کہ پاکستان میں 30 فیصد زیادہ بلکہ 40 فیصد کے قریب ہیں جب کہ بھارت میں یہی ٹیکسز کی شرح 20 فیصد سے بھی کم ہے۔

عاصم ایاز نے کہا کہ پاکستان میں اب دیگر گاڑیاں بنانے والی کمپنیاں جیسے کییا، ہونڈائی کے پاکستان میں آنے سے ہنڈا، ٹویوٹا اور سوزوکی کو گاڑیوں کی قیمتیں کم کرنی پڑیں گی۔

ایک سوال کے جواب میں عاصم ایاز نے کہا کہ قیمتوں کا انحصار ڈالر کی قیمت، مزدوری اور ٹیکس کی شرح پر ہوتا ہے جیسے جیسے یہ چیزیں بڑھتی ہیں قیمتوں میں فرق آتا ہے مگر ہمارے ملک میں ایک بار قیمتیں بڑھنے کے بعد نیچے بمشکل آتی ہیں۔

  • WHAT A FUCKING MORON HE IS TO SAYING PRICES ARE LOWER IN PAKISTAN AS COMPARED TO WORLD??
    1st QUESTION IS ARE THEY PAYING SAME WAGES AS HONDA OR TOYOTA WORKERS GETTING IN DEVELOPED WORLD?? ANSWER IS NO.
    2nd QUESTION IS ARE THE GIVING SAME QUALITY AND SECURITY FEATURES AS COMPARED TO THE VEHICLES THEY SELLING IN DEVELOPED WORLD??? AGAIN ANSWER IS NO.
    3rd QUESTION IS ARE THEIR OVERHEADS EXPENSES ARE SAME COMPARED TO DEVELOPED WORLD???? A BIG NO AGAIN.
    FOR EXAMPLE, HONDA ACCORD LX SELLING PRICE IS USD 25,165 IN US, HOW MUCH THEY ASK HERE FOR the SAME MODEL WITH INFERIOR / PREVIOUS GENERATION ENGINE????? YES IT’S TRUE, ENGINES OF THE VEHICLES THEY ARE SELLING IN PAKISTAN ARE FROM OLD GENERATION, OBSOLETE EVERYWHERE IN THE WORLD DUE TO HIGH EMISSION PERCENTAGES.
    YET THEY DARE TO SAY THAT BULSHIT AND FEEL PROUD????

    • It’s not their fault they are businessmen. They will cut the corners when there is no check and balance in place in order to maximise their profit. Same as other multinational companies. They are getting rid their crap in our markets for same or more prices than the rest of the world. Not only our governments are responsible for this but we as a nation as well who always give priority to foreign and branded products.

  • You forgot to mention that we are providing sub standard vehicles but charging clients for full standard vehicle. We are also sending profits to the pakistani owners in Dollars out of Pakistan. And a lot more.

  • یہاں گوشت سبزیاں، آٹا ،دال، چینی، گھی، دوائیں، گیس، تیل ہر چیز کی قیمت آسمان پر پنہچ چکی ہے تم صرف گاڑیوں کو رو رہے ہو


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >