ممکنہ آتشزدگی کا خطرہ، ہیونڈائی نشاط نے ٹوسون گاڑیاں ری کال کرلیں

 

پاکستان میں ہیونڈائی موٹرز نے حال ہی میں متعارف کروائی گئی ٹوسون میں ممکنہ طور پر آتشزدگی کے خطرے کے پیش نظر 1600 سے زائد گاڑیوں کو واپس بلوالیا ہے۔

تفصیلات کے مطابق پاکستان میں کراس اوور اور ایس یووی گاڑیوں کی مانگ میں اضافہ دیکھا جارہا ہے، کراس اوور دراصل وہ گاڑی ہوتی ہے جو کار اور ایس یو وی کی درمیانی شکل کی ہو، کیا موٹرز کی جانب سے متعارف کروائی گئی سپورٹیج کے بعد مارکیٹ میں آنے والی ہیونڈائی ٹوسون کراس اوور گاڑیوں کو پسند کرنے والے صارفین کی توجہ اپنی طرف مبذول کروانے میں کافی حد تک کامیاب ہوگئی تھی۔

گزشتہ تین مہینوں میں 1600 سے زائد یونٹس کی فروخت والی ٹوسون میں ایک ایسی فنی خرابی پیدا ہوگئی جس کی وجہ سے کمپنی کو ان گاڑیوں کوری کال کرنا پڑگیا ہے۔

کمپنی نے یہ فیصلہ اینٹی لاک بریکنگ سسٹم میں سامنے آنے والی ایک خرابی کے بعد کیا ہے ،ہیونڈائی نشاط نے اپنے صارفین کو یہ پیغام پہنچایا کہ ٹوسون گاڑیوں کو اپنی قریبی ڈیلر شپ پر لے جایا جائے جہاں ان گاڑیوں میں پیدا ہونے والی اس ممکنہ خرابی کو دور کرکے صارفین کو واپس کردیا جائے گا۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق گاڑیوں کو ری کال کرنے کی وجہ امریکہ میں ان گاڑیوں کی وجہ سے پیش آنے والے آتشزدگی کے 18 سے زائد واقعات ہیں جس کے بعد امریکہ میں روڈ سیفٹی محکمہ نے ٹوسون گاڑیوں کے مالکان کو ہدایات جاری کی ہیں کہ جب تک ان گاڑیوں میں خرابی کو دور نہیں کیا جاتا تب تک انہیں گھر کے اندر بنے گیراج میں پارک کرنے کے بجائے روڈ پر پارک کیا جائے تاکہ گھر کے اندر کسی بھی حادثے سے بچا جاسکے۔

ایسے ہی صورتحال آسٹریلیا میں بھی نظر آئی جہاں 93 ٹوسون گاڑیوں کو ری کال کیا گیا، وہاں بھی صارفین کو گاڑی کو کھلی جگہ پر پارک کرنے کا مشورہ دیا گیا ہے۔

اس واقعے سے متعلق ہیونڈائی موٹرز کےپاکستان میں چیف فنانشل آفیسر نوریز عبداللہ نے کہا کہ یہ اقدام احتیاطی تدابیر کے طور پر اٹھایا جارہا ہے ۔ ہیونڈائی موٹرز کے مطابق اس ری کال مہم میں تمام گاڑیوں کے بجائے صرف چیسیس نمبر0001 سے1611 تک کی گاڑیاں واپس بلائی جائیں گی۔

ہیونڈائی امریکہ کے مطابق ان گاڑیوں میں یا تو ایک فیوز کا اضافہ کیا جائے گا یا پھر ضرورت پڑنے پر ان کا اے بی ایس کمپیوٹر تبدیل کردیا جائے گا تاکہ آتشزدگی کے واقعات سے نمٹا جاسکے۔


Featured Content⭐


24 گھنٹوں کے دوران 🔥


From Our Blogs in last 24 hours 🔥


>