ایف بی آر نے 1300سی سی تک کی گاڑیوں کے ٹیکسز میں کمی کی تجویزمسترد کر دی

 1300 سی سی گاڑیوں کے ٹیکسز میں کمی کی تجویز،ایف بی آر کا ردعمل آ گیا

بورڈ آف ریونیو(ایف بی آر) نے آئندہ مالی سال کے بجٹ میں 1300 سی سی گاڑیوں کے ٹیکسز میں کمی کی تجویز مسترد کردی۔

خبررساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق انجیئرنگ ڈویلپمنٹ بورڈ نے کہا ہے کہ آئندہ مالی سال کےبجٹ میں 1300 سی سی گاڑیوں کی قیمت میں کمی نہ ہونے میں ایف بی آر کے ٹیکسز رکاوٹ بن رہے ہیں۔

رپورٹ کے مطابق آئندہ مالی سال کے بجٹ میں 1300 سی سی گاڑیوں کی قیمت میں کمی کی تجویز بھی دی گئی تھی اگر یہ تجویز مان لی جاتی تو ان گاڑیوں کی قیمتوں میں 4 لاکھ روپے تک کی کمی واقع ہوسکتی تھی۔

تاہم ایف بی آر نے محصولات متاثر ہونے کی وجہ سے یہ تجویز مسترد کردی اور صرف 850 سی سی گاڑیوں کی قیمتوں میں کمی کی تجویز مانی۔

میڈیا رپورٹس کے مطابق 1300 گاڑیوں کے ٹیکسز میں کمی کی تجویز ابھی خارج نہیں ہوئی بلکہ یہ ابھی بھی زیر غور ہے اور ممکنہ طور پر اس کا جائزہ بجٹ منظوری کے بعد بھی لیا جاسکتا ہے۔

دوسری جانب ایف بی آر نے گاڑیوں پر اون کی حوصلہ شکنی کیلئے اون منی پر 50 ہزار سے2 لاکھ روپے تک ٹیکس عائد کرنے، نئی گاڑی بک کرواکر فروخت کرنےپر بھی ٹیکس عائد کرنے کی تجویز کی ہے، اس تجویز کے تحت ہزار سی سی تک کی گاڑی کی فروخت پر 50 ہزار جبکہ ہزار سے 2 ہزار سی سی کی گاڑی فروخت کرنے پر 1 لاکھ روپے تک کا ٹیکس وصول کیا جائے گا۔

ایف بی آر کے مطابق 2 ہزار سی سی سے بڑی گاڑی کی فروخت پر 2 لاکھ روپے تک ٹیکس فروخت کرنے والوں پر عائد کیا جائے گا۔


Featured Content⭐


24 گھنٹوں کے دوران 🔥


From Our Blogs in last 24 hours 🔥


>