ایم جی موٹرز مبینہ فراڈ،صارفین کا دفتر پر دھاوا،انتظامیہ آفس بند کر کے فرار

ایم جی موٹرز مبینہ فراڈ، صارفین نے اسلام آباد دفتر پر دھاوا بول دیا

پاکستان میں نئی آنے والی آٹو کمپنی ایم جی موٹرز کے اسلام آباد آفس پر صارفین نے دھاوا بول دیا ہے، صارفین کے مطابق کمپنی صارفین سے لاکھوں روپے ایڈوانس رقم وصول کرنے کے باوجود بھی گاڑیاں دینے میں ٹال مٹول سے کام لے رہی ہے۔

ایم جی موٹرز کی جانب سے گاڑیاں بک کروانے والے صارفین کو ڈیلیوری کیلئے بار بار نئی تاریخ ملنے سے تنگ آکر صارفین نے ایم جی موٹرز کے اسلام آباد آفس پر دھاوا بول دیا جس کی ویڈیو بھی منظر عام پر آگئی ہے ، مشتعل مظاہرین اور ایم جی موٹرز کے عملے میں شدید تکرار کے بعد ہاتھا پائی شروع ہوگئی تھی۔

بعد ازاں ایم جی موٹرز کی جانب سے ٹویٹر پر جاری کردہ بیان میں کہا گیا کہ اسلام آباد میں ایم جی موٹرز کے دفتر کو کورونا وائرس کی وباء کے پیش نظر ڈس انفیکشن کیلئے عارضی طور پر بند کردیا گیا ہے، ایم جی موٹرز یہیں ہے اور تمام گاڑیوں کی ڈیلیوریز کا عمل بھی جاری رہے گا۔

نجی ٹی وی چینل کے پروگرام سے گفتگو کرتے ہوئے سینئر ایڈوکیٹ قاسم احمد کا کہنا تھا کہ جنوری میں مجھ سمیت 70 سے 80صارفین نے یہ گاڑی بک کروائی تھی، اور ہم سب نے 20 لاکھ روپے فی کس کی ایڈوانس رقم بھی جمع کروائی، صرف جنوری کے مہینے میں اسلام آباد سے 1ہزار سے زائد گاڑیاں بک کروائی گئی، ایڈوانس کی کل رقم کا حساب لگائیں تو یہ 2 سو کروڑ روپے بنتی ہے۔

ایم جی موٹرز مبینہ فراڈ،صارفین کا دفتر پر دھاوا،انتظامیہ آفس بند کر کے فرار

انہوں نے کہا کہ معاہدے کی رو سے ہمیں جون میں گاڑی کی ڈیلیوری ملنی تھی، اس تاریخ کو پہلے جولائی تک کھینچا گیا اور پھر اب کہا جارہا ہے کہ 16 اگست کو آپ کو بتایا جائے گاکہ ستمبر یا اکتوبر میں آپ کو گاڑیاں فراہم کی جائیں گی۔

انہوں نے الزام عائد کیا کہ یہ فراڈ کا کیس ہے جس میں ہماری گاڑیوں کو ایم جی موٹرز شورومز کو بیچ رہی ہے ، میں نے اس حوالے سے عدالتی چارہ جوئی شروع کردی ہے ، میری درخواست کو رجسٹر میں دائر تک نہیں کیا گیا ، میرے سمیت اب تک 10 سے زائد صارفین نے اس حوالے سے شکایات درج کروائی ہیں تاہم کسی کی درخواست پر کارروائی نہیں کی گئی۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >