کاروں کی فروخت میں 114 فیصد اضافہ،معیشت میں بہتری کی امید ؟

ملک بھر میں کاروں کی فروخت میں ریکارڈ اضافہ ہوا ہے جس سے معیشت میں بہتری کی امید لگائی جارہی ہے، رپورٹ کے مطابق رواں مالی سال 2021-22 کے پہلے مہینے جولائی کے دوران ملک بھر میں کاروں کی فروخت میں 114 فیصد کا نمایاں اضافہ ریکارڈ کیا گیا ہے۔

حکومت کی جانب سے مارک اَپ ریٹ اور بجٹ میں آٹو سیکٹر پر ٹیکسوں میں کمی ہوئی جس سے گاڑیوں کی فروخت میں اضافہ دیکھنے میں آیا، بینکوں کی جانب سے آٹو فنانسنگ میں اضافہ کی وجہ سے بھی کاروں کی خرید بڑھی ہے،پاکستان آٹوموٹیو مینوفیکچررز ایسوسی ایشن کے اعدادوشمار کے مطابق جولائی کے دوران ملک بھر میں 24 ہزار 918 یونٹ کاریں فروخت ہوئیں جو 2020 کے مقابلے میں 114 فیصد زیادہ ہے، گزشتہ مالی سال پہلے ماہ کے دوران ملک بھر میں 11 ہزار 659 یونٹ کاروں کی فروخت ریکارڈ کی گئی تھی۔

ٹاپ لائن سکیورٹیز کے تجزیہ کار عمیر نصیر نے بتایا کہ اگر لکی موٹرز کارپوریشن کی فروخت ہونے والی کاروں کو بھی شامل کیا جائے تو جولائی کے دوران کاروں کے 27 ہزار یونٹ فروخت ہوئے، جو سالانہ اعتبار سے 105 فیصد اور ماہانہ لحاظ سے 75 فیصد زیادہ ہے۔

گزشتہ مالی سال کے دوران بینکوں کی جانب سے 97 ارب روپے کی آٹو فنانسنگ کی گئی،ملک کی معاشی بحالی نے بھی آٹو سیکٹر پر مثبت اثر ڈالا،گزشتہ ماہ آٹو سیکٹر کیلئے ٹیکس ریلیف کا اعلان کیا گیا تھا،ہائبرڈ اور الیکٹریکل وہیکل کے لئے ٹیکس میں کمی سمیت ملک میں تیار ہونے والی چھوٹی گاڑیوں پر سیلز ٹیکس ختم کیاگیاتھا،جاری مالی سال کے پہلے ماہ کے دوران ملک میں زرعی ٹریکٹرز کی پیداوار میں 38 فیصد اور فروخت میں 19.90 فیصد اضافہ ریکارڈ کیا گیا تھا۔


Featured Content⭐


24 گھنٹوں کے دوران 🔥


From Our Blogs in last 24 hours 🔥


>