مودی سرکار کی مذہبی جنونیت نے بھارتی معیشت کا بھرکس نکال دیا

Narendra Modi

نئی دہلی:  مودی سرکار کی مذہبی جنونیت کے ہاتھوں بھارتی معیشت کی تباہی کا سلسلہ جاری۔۔ آئی ایم ایف نے خبردار کردیا۔۔بھارت میں مذہبی جنونیت اور اس کے عوامی ردعمل کے اثرات بھارتی معیشت پر بھی پڑنے لگے، عالمی مالیاتی ادارے آئی ایم ایف نے بھارتی معیشت  سے متعلق پیشگوئی کردی۔

آئی ایم ایف کا کہنا ہے کہ بھارت میں قوت خرید، سرمایہ کاری اور ٹیکس وصولی میں نمایاں کمی آرہی ہے۔ آئی ایم ایف کے مطابق قرضوں اور سود کی ادائیگی کے باعث اخراجات میں اضافہ ممکن نہیں۔

واضھ رہے کہ گزشتہ ماہ  کی بھارتی معیشت کی سرکاری رپورٹ کے مطابق بھارتی معیشت کی شرح نمو 6 سال کی کم ترین سطح پر آگئی، جولائی تا ستمبر بھارتی معاشی شرح نمو ساڑھے 4 فیصد رہی۔ رپورٹ کے مطابق گزشتہ سال جولائی تا ستمبر بھارتی معیشت کی شرح نمو 7 فیصد تھی، رواں سال اپریل سے جون 2019 میں بھارت شرح نمو 5 فیصد تھی۔

دوسری طرف بھارت میں بیروزگاری کی شرح بھی 40 سال کی بلند ترین سطح پر آگئی۔ آٹو سیکٹر میں بھی بے انتہا تنزلی اور صارفین کی قوت خرید میں نمایاں کمی دیکھی گئی۔ خراب معاشی صورتحال کی وجہ سے لدھیانہ میں سائیکلوں ، آگرہ میں جوتے جیسی صنعتوں سے وابستہ شعبے بڑی تعداد میں بند ہو چکے ہیں۔ بسکٹ، ٹیلی کام، آٹو سمیت بڑی بڑی کمپنیاں بحران کی وجہ سے اپنے ملازمین کو نوکری سے نکال رہی ہیں۔ سرمایہ کاروں نے بھی سرمائے سے ہاتھ کھینچ لیا ہے اور دیکھو اور انتظار کرو کی پالیسی پر عمل پیرا ہیں۔

بھارتی معیشت دانوں کے مطابق 3 برسوں میں بھارت میں بے روزگاری میں تیزی اضافہ ہوا ہے، ملک میں ملازمین کی تعداد 45 کروڑ تھی جو کم ہو کر 41 کروڑ رہ گئی ہے۔بھارتی سٹاک ایکسچینج بھی تباہ ہوکر رہی گئی تھی جسے بھارت نے اوپر لے جانے کیلئے کارپوریٹ ٹیکس میں نرمی کی لیکن یہ عارضی ریلیف ثابت ہوا


Featured Content⭐


24 گھنٹوں کے دوران 🔥


From Our Blogs in last 24 hours 🔥


>