پاکستان ٹیکسٹائل انڈسٹری نے پیدا وار میں چین کو پیچھے چھوڑ دیا

حکومت کا خام کاٹن کی امپورٹ سے ڈیوٹی ہٹائے جانے کے بعد ٹیکسٹائل انڈسٹری پاکستان کی سب سے زیادہ ایکسپورٹ کرنے والی انڈسٹری بن گئی ہے.


پاکستان کی ٹیکسٹائل انڈسٹری نے ایکسپورٹ آرڈرز پر چائنہ کو بھی پیچھے چھوڑ دیا ہے جو اس سے قبل دنیا کا سب سے بڑا ٹیکسٹائل ایکسپورٹر ہے، لیکن کرونا وائرس کے باعث جاری بحران نے اس کی پروڈکشن کو بری طرح متاثر کیا ہے.
آل پاکستان ٹیکسٹائل ملز ایسوسی ایشن کے سابق چیئر مین آصف انعام کے مطابق پاکستان ٹیکسٹائل انڈسٹری اپنی فل کیپیسیٹی میں کام کررہی ہے. انکا کہنا تھا کہ اگر اسی طرح کام ہوا تو ٹیکسٹائل انڈسٹری کی ترقی کے سبب قومی خزانے میں مالی سال 2019-2020 میں 24 سے 25 بلین کا اضافہ ہوگا. ان کا مزید کہنا تھا ہمارے پاس اب مزید آرڈرز کی گنجائش بھی نہیں ہے.
حکومت کے. مطابق آئندہ پانچ سالوں میں ٹیکسٹائل انڈسٹری دوگنا ترقی کے گی لیکن شرط یہ ہے کہ حکومت توانائی بحران پر قابو پائے اور بجلی گیس کی قیمتوں میں کمی کرے، اپٹما نے حکومت سے پانچ سال کی پالیسی کا مطالبہ کیا ہے کہ جس کے تحت انڈسٹری کو سبسڈی اور امپورٹ ایکسپورٹ کے ٹیکسز طے جائیں.


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >