ایف بی آر نے نئے مالی سال کے پہلے ماہ ہدف سے کہیں زیادہ ریونیو حاصل کرلیا

ایف بی آر نے نئے مالی سال کے پہلے مہینے جولائی میں 57 ارب روپے کا اضافی ریونیو حاصل کرلیا۔ ایف بی آر کا پہلے ماہ ہدف 243 ارب روپے تھا لیکن حکومت نے 300 ارب روپے جمع کرلئے

ایف بی آر کا کہنا ہے کہ اسکے باوجود کہ حکومت نے کسٹمز ڈیوٹی میں 25 ارب روپے کا ریلیف دیا تھا جبکہ کاروباری برادری کو 15 ارب روپے کا ٹیکس ریفنڈ کیا تھا، ایف بی آر نے ٹارگٹ سے زائد ریونیو جمع کرلیا ہے۔ ۔

دوسری جانب معاون خصوصی شہباز گل نے اپنے ٹویٹ میں کہا کہ سال کے پہلے ماہ کا ہدف 243 ارب، جمع کردہ ریونیو 300 ارب ہے۔

اپنے ٹویٹ میں معاون خصوصی شہباز گل نے لکھا کہ مالی سال کے پہلے ماہ کا ہدف 243 ارب رکھا گیا جبکہ جمع کردہ ریونیو 300 ارب ہے، یہ اضافہ صرف بہتر انتظامی کنٹرول اور نگرانی کے باعث ممکن ہوا۔

شہبازگل نے مزید لکھا بدل رہا ہے پاکستان ، اضافی ریونیو 57 ارب کے باوجود کسٹمز ڈیوٹی میں 25 ارب کا ریلیف دیا گیا ہے، کاروباری کمیونٹی کو 15 ارب ریفنڈز جاری کئے گئے ہیں جو گزشتہ سال جولائی میں7 ارب تھے، فنانس ایکٹ 2020 میں کسٹمز پر کوئی نیا ٹیکس یا ڈیوٹی عائد نہیں کی گئی۔

  • Nothing special last time they select tax target of 4500 billion and they collected nearly 4000 billion and this time because of corona virus they reduce their target of tax collection so as per rate of tax collection they will achieve same target of previous year


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >