ملکی برآمدات لاک ڈاؤن کے باوجود جولائی میں 2 ارب ڈالر تک پہنچ گئیں

ملکی برآمدات لاک ڈاؤن کے باوجود جولائی میں تقریبا 2 ارب ڈالر تک پہنچ گئیں

کرونا وائرس کے پھیلاؤ پر قابو پانے کے لیے ملک میں سمارٹ لاک ڈاؤن نافذ ہے، لاک ڈاؤن کے باوجود ملکی برآمدات جولائی کے مہینے میں تقریبا 2 ارب ڈالر کے قریب پہنچ چکی ہیں، جبکہ ملکی درآمدات میں کمی ریکارڈ کی گئی ہے۔

رواں مالی سال جولائی 2020 میں برآمدات 5 اعشاریہ 8 فیصد کے اضافے سے تقریبا 2 ارب ڈالر رہیں جبکہ گذشتہ مالی سال کے اسی عرصے میں برآمدات ایک ارب 88 کروڑ ڈالر تھیں۔ لاک ڈاؤن کے باوجود ملکی برآمدات میں اضافہ تجارتی سیکٹر کے لیے ایک اچھی خبر ہے۔

دوسری جانب جولائی 2020 میں ملکی درآمدات میں کمی ریکارڈ کی گئی جو تقریباً 4 اعشاریہ 2 فیصد ہے، جبکہ گزشتہ مالی سال کے اسی عرصے کے دوران ملکی درآمدات 3 ارب 69 کروڑ ڈالر ریکارڈ کی گئی تھیں۔

دوسری جانب مشیر تجارت عبدالرزاق داؤد کا ملکی برآمدات میں اضافہ کو بڑی کامیابی قرار دیتے ہوئے کہنا تھا کہ کرونا وائرس کے باعث لاک ڈاؤن کے پہلے چار ماہ میں ملکی برآمدات میں مسلسل کمی دیکھنے میں آ رہی تھی لیکن سمارٹ لاک ڈاؤن کے باوجود ملکی برآمدات میں اضافہ ہونا خوش آئند ہے، انہوں نے کہا کہ میڈ ان پاکستان کے نام سے برآمدات میں اضافہ دیکھنے میں آرہا ہے۔

  • Export se import ziyadah sharm karo aur import kam karo
    inqelab inqelab waahid hal inqelab e islami ke zarye sharia’t ka nifaz…. haq ke liye jiddojohad, sabr aur Allah per tawakkal karo…. FIRQABAZI HARAM HAI, SIRF MUSLIM BANO

  • c’mon man! 2 se agay ginti nahi bar rahi. I think exporters are bringing their proceeds through remittance channel. Hence why remittance is increasing (despite job losses around the world) while the exports are decreasing


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >