پاکستان اسٹاک ایکسچینج نے دنیا کی دوسری بہترین مارکیٹ کا اعزاز اپنے نام کر لیا

پاکستان اسٹاک ایکسچینج نے دنیا کی دوسری بہترین مارکیٹ کا اعزاز اپنے نام کر لیا

پاکستان سٹاک ایکسچینج نے کرونا وائرس کے دوران ہونے والے نقصانات پر قابو پاتے ہوئے دنیا کی دوسری بیسٹ مارکیٹ کا اعزاز اپنے نام کر لیا ہے، سٹاک مارکیٹ نے 17 سال بعد بہترین کارکردگی کا مظاہرہ کیا ہے۔

سرمایہ کاروں نے سٹاک ایکس چینج میں بینک، سیمنٹ اور فرٹیلائزر کی کمپنیوں کے حصص میں دلچسپی ظاہر کرتے ہوئے بڑے پیمانے پر خرید و فروخت کی، ماہرین کے مطابق سٹاک ایکسچینج کے اوپر جانے کی وجہ پاکستان میں کرونا وائرس کی کیسز میں نظر آنے والی واضح کمی ہے۔

ذرائع کے مطابق پاکستان سٹاک ایکسچینج میں دنیا کی دیگر مارکیٹوں کے مقابلے میں مثبت رجحان ابھی بھی برقرار ہے، جب کہ دنیا کی دیگر اسٹاک ایکسچینج کی مارکیٹیں کرونا وائرس کی دوسری لہر کی وجہ سے ابھی بھی منفی میں جا رہی ہیں، جس کی وجہ سے سرمایہ کار پاکستان سٹاک ایکسچینج میں سرمایہ لگانے کو ترجیح دے رہے ہیں، جو اسٹاک ایکسچینج میں واضح بہتری کی ایک وجہ ہے۔

ذرائع نے یہ بھی دعویٰ کیا ہے کہ سرمایہ کاروں نے پاکستان سٹاک ایکسچینج میں سٹیل، آئل اور سیمنٹ کے سیکٹر میں زیادہ دلچسپی ظاہر کی ہے، اس کے علاوہ باقی تمام سیکٹرز میں بھی سرمایہ کاروں کی حصص کی خرید و فروخت میں گزشتہ کچھ دنوں سے دلچسپی برقرار ہے، سرمایہ کاروں کی دلچسپی کی بدولت پاکستان سٹاک ایکسچینج کی 39 ہزار اور 40 ہزار کی حدیں بحال ہوگئی ہیں۔

ماہرین کے مطابق پاکستان اسٹاک ایکسچینج میں زبردست تیزی حکومت کی جانب سے حالیہ دی گئی پالیسیوں کے باعث بھی آئی ہے، حکومت نے کرونا وائرس کی وبا کے دوران معیشت کو سہارا دینے کیلئے سود میں بھی واضح کمی کی ہے جو 13 فیصد سے گھٹ کر 7 فیصد پر آ گئی ہے، جو ماہرین کی جانب سے اسٹاک ایکسچینج میں آنے والی زبردست تیزی کی وجہ قرار دی جا رہی ہے۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >