کے الیکٹرک کے منافع میں 48 فیصد کمی

کراچی الیکٹرک سپلائی کمپنی کو جولائی تا دسمبر 2019 کے دوران خالص منافع میں اڑتالیس فیصد کمی کا سامنا کرنا پڑا، اڑتالیس فیصد کمی کے بعد کے الیکٹرک کا خالص منافع دو ارب 69 کروڑ روپے رہ گیا ہے، کراچی الیکٹرک کی جانب سے جاری کی گئی مالیاتی رپورٹ میں منافع میں کمی کی وجہ اضافی لاگت اور ٹیکس ادائیگی شامل ہے۔

کے الیکٹرک کی جانب سے جولائی تا دسمبر 2019 کو ختم ہونے والی ششماہی رپورٹ میں انکشاف کیا ہے کہ کے الیکٹرک کو جولائی تا دسمبر کے دوران ختم ہونے والی ششماہی سے متعلق رپورٹ جاری کی گئی ہے جس میں بتایا گیا ہے کہ کمپنی کے خالص منافع میں 48 فیصد کمی واقع ہوئی ہے جس کے بعد ادارے کے خالص منافع کی حد 2 ارب 69 کروڑ روپے پر آ گئی ہے۔

پاکستان سٹاک ایکسچینج میں جمع کروائی گئ رہورٹ میں کہا گیا ہے کہ دسمبر تک کیش ڈیویڈنڈ، بونس شیئرز اور رائٹ شیئرز نہیں دیا، جولائی 2018ء سے دسبمر 2019 میں کے الیکٹرک کو 2 ارب 69 کروڑ کا خالص منافع ہوا تھا۔

کے الیکٹرک نے اپنی مالیاتی رپورٹ میں منافع میں کمی کی وجہ ٹیکس کی ادائیگی اور اضافی لاگت بتائی گئی ہے، مالیاتی رپورٹ کے مطابق دسمبر کے آخر میں ختم ہونیوالی ششماہی میں 2 ارب 2 کروڑ روپے ٹیکس کی ادائیگی کی۔

کراچی الیکٹرک سپلائی کمپنی کی جانب سے جاری کی گئی مالیاتی رپورٹ میں مزید بتایا گیا ہے کہ کے الیکٹرک کی کل آمدنی 158 ارب 38 کروڑ روپے رہی تھی، جو گزشتہ مالی سال کے جولائی اور دسمبر کے عرصے کی اسی مدت میں 145 ارب 44 کروڑ روپے رہی تھی،جس میں اب 48 فیصد کی واضح کمی واقع ہوئی ہے


Featured Content⭐


24 گھنٹوں کے دوران 🔥


From Our Blogs in last 24 hours 🔥


>