عالمی پیداوار میں ایشیا کا حصہ 34.9 فیصد تک پہنچ گیا

کرونا کے باعث عالمی معیشت کو 5800 ارب ڈالر نقصان کا خدشہ

ایشیا کی پیداواری صلاحیت بڑھ کر34.9تک پہنچ گئی، اے ڈی بی رپورٹ

بحرالکاہل اور ایشیا کے ممالک نے گزشتہ 19 برسوں میں بہت تیزی سے ترقی کرتے ہوئے نمایاں پیش رفت دکھائی ہے۔ ایشیا میں بسنے والے کروڑوں لوگوں کو غربت کی زندگی سے نکال کر سیدھی ڈگر پر لایا گیا۔

ایشین ڈویلپمنٹ بینک کی جاری کردہ رپورٹ کے مطابق 2019 میں ایشیا میں غیر ملکی سرمایہ کاری کا ایک تہائی حصہ آیا جب کہ دوسری جانب عالمی برآمدات میں یہ حصہ 36.5 فیصد تک پہنچ چکا ہے۔

رپورٹ کے مطابق دنیا کی مجموعی پیداوار میں خطے کے ممالک کا حصہ بڑھ کر 34.9 فیصد تک پہنچ گیا جو 2019 میں 26.3 فیصد تھا۔

دوسری طرف پاکستان کی بات کی جائے تو موجوہ حکومت کے پہلے سال زرمبادلہ کے ذخائر میں اضافہ اور کرنٹ اکاؤنٹ خسارے میں نمایاں کمی ہوئی تاہم امسال قرضہ اور مالی خسارہ بڑھ گیا۔

2018 میں کرنٹ اکاؤنٹ خسارہ 19ارب ڈالر سے زیادہ تھا جو مالی سال 19-2018 میں کم ہوکر 13 ارب 43 کروڑ ڈالر رہ گیا۔ مالی سال 2019 میں معاشی شرح نموایک فیصد رہی ۔


Featured Content⭐


24 گھنٹوں کے دوران 🔥


From Our Blogs in last 24 hours 🔥


>