امریکی ڈالر157 پر، ایک سال کی کم ترین سطح پر پہنچ گیا

شرح سود میں کمی کے بعد اوپن مارکیٹ میں ڈالر کی قدر میں بھی کمی

روپے کی قدر کی بحالی کا سلسلہ جاری۔۔ امریکی ڈالر ایک سال کی کم ترین سطح پر پہنچ گیا۔

تفصیلات کے مطابق پاکستان میں روپے کی قدر میں مزید بحالی کا سفر جاری ہے، امریکی ڈالر ایک سال کی کم ترین سطح پر پہنچ گیا جس کی وجہ سے بیرونی قرضوں میں 10 کھرب روپے سے زائد کی کمی ریکارڈ کی گئی۔

سٹیٹ بینک آف پاکستان کی طرف سے جاری کردہ اعداد و شمار کے مطابق رواں ہفتے کے دوسرے کاروباری روز کے دوران ایک مرتبہ پھر روپے کے مقابلے میں امریکی ڈالر مزید 19 پیسے سستا ہو گیا جس کے بعد ڈالر 158 روپے سے بھی نیچے آگیا اور ڈالر کی قیمت 157 روپے 85 پیسے ہو گئی ہے۔

اس طرح ڈالر کی قدر کی کمی سے امریکی ڈالر تقریبا ایک سال کی کم ترین سطح پر پہنچ گیا ہے، 10 مارچ 2020 میں ڈالر 157 روپے 35 پیسے کی سطح پر تھا لیکن کرونا وبا اور غیرملکیوں کے بھاری تعداد میں پیسہ نکلوانے پر ڈالر چند ہی ماہ میں 168 پر پہنچ گیا۔

خیال رہے کہ مارچ 2020 کے بعد ڈالر کی قدر میں اضافہ دیکھا جاتا رہا اوراگست 2020ء کو روپے کے مقابلے میں ڈالر تاریخ کی بلند سطح پر پہنچ گیا اور امریکی ڈالر 168 روپے 43 پیسے کا ہوگیا۔

6 ماہ کے عرصہ روپے کے مقابلے میں امریکی ڈالر 6.4 فیصد سستا ہوا، ا جس کی وجہ بیرونی قرضوں کے بوجھ میں 1160 ارب روپے کمی ریکارڈ کی گئی۔

معاشی ماہرین نے روپے کے مقابلے میں دالر کی قدر میں کمی پر ڈالر کی قیمت 150 روپے پر پہنچنے کی پیشنگوئی کی ہے۔

  • وڑ گئے بھائی۔ میرے فری لانسنگ سے پیسے آنے تھے، میں 160 کا موڈ بنا کر بیٹھا تھا۔ اب وہ کم ملیں گے ریٹ گرنے کی وجہ سے۔ ذاتی طور پر نقصان ہے مگر اجتماعی طور پر اور ملکی مفاد میں فائدہ ہوا ہے جس سے میں خوش ہوں۔ انشااللہ ڈالر کی قیمت مزید کم ہونے پر پرامید ہوں،

    • that was due to artificial appreciation by buying rupee in the market and that cost Pakistan more than 2 billion dollars in last two years of PML-N government. Now this PTI government doesn’t support the rupee with artificial means, it lets market decide the exchange rate, saving Pakistan billions of dollars.


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >