سینیٹ الیکشن کے بعد سٹاک مارکیٹ شدید مندی کی لپیٹ میں

سینیٹ الیکشن کے بعد پیدا ہونے والی سیاسی بے یقینی کے باعث سٹاک مارکیٹ شدید مندی کی لپیٹ میں

پاکستان اسٹاک ایکسچینج پر گزشتہ روز ہونے والے سینیٹ انتخابات کے نتائج کے منفی اثرات پڑنا شروع ہو گئے ہیں، سینیٹ انتخابات کے بعد سے پیدا ہونے والی سیاسی بے یقینی کی وجہ سے اسٹاک مارکیٹ میں آئی تیزی ایک بار پھر شدید مندی میں بدل گئی ہے۔

تفصیلات کے مطابق رواں ہفتے کے چوتھے کاروباری روز کا آغاز ہی مندی سے ہوا اور ملک میں پیدا ہونے والی سیاسی بے یقینی کی وجہ سے سرمایہ کار دیکھو اور انتظار کرو کی پالیسی پر عمل پیرا ہو گئے، جس کی وجہ سے کاروبار کے آغاز میں ہی سرمایہ کار حصص کی خریداری میں دلچسپی لینے کے بجائے فروخت میں دلچسپی لیتے نظر آئے۔

چوتھے کاروباری روز ٹریڈنگ کے دوران سٹاک مارکیٹ میں ایک ہزار سے زائد پوائنٹس کی مندی دیکھی گئی تھی اور 100انڈکس 45087.63 پوائنٹس کی سطح پر پہنچ گیا تھا، تاہم کاروباری روز کے اختتام تک سرمایہ کاروں کی جانب سے منافع بخش کمپنیوں کے حصص کی خریداری میں دلچسپی لی گئی جس کے باعث معمولی مندی کے اثرات زائل ہوئے۔

پاکستان اسٹاک مارکیٹ میں آئی شدید مندی کی وجہ سے 100 انڈیکس کی 46100 ،46000 ،45900 ،45800 ،45700 ،45600، 45500 ،45400 ،45300 کی نفسیاتی حدیں ایک بار پھر گر گئیں جس کی وجہ سے 100ارب روپے سے زائد کا نقصان برداشت کرنا پڑا۔

رواں ہفتے کے چوتھے کاروباری روز کے اختتام پر پاکستان سٹاک مارکیٹ میں 882.25 پوائنٹس کی مندی دیکھی گئی، جس کے باعث 100 انڈیکس 45278.53 پوائنٹس کی سطح پر پہنچ کر بند ہوا۔


Featured Content⭐


24 گھنٹوں کے دوران 🔥


From Our Blogs in last 24 hours 🔥


>