پاکستان کو آئی ایم ایف کی جانب سے 50 کروڑ ڈالر قرضے کی قسط موصول

آئی ایم ایف کی جانب سے 50 کروڑ ڈالر پاکستان کو مل گئے، مرکزی بینک کی تصدیق

ترجمان اسٹیٹ بینک نے تصدیق کی کہ آئی ایم ایف سے تقریباً 50 کروڑ ڈالر قرض کی قسط گزشتہ روز 30 مارچ کو پاکستان کو موصول ہو گئی ہے، آئی ایم ایف سے ملنے والی قرض کی قسط کی مجموعی مالیت 498.7 ملین ڈالر ہے۔

یاد رہے کہ اس قرض کی ادائیگی کے لیے 25 مارچ کو آئی ایم ایف نے قرض کی منظوری دیتے ہوئے قسط جاری کرنے کے احکامات دیئے تھے اور ساتھ ہی انٹرنیشنل مانیٹرنگ فنڈز کی جانب سے ایک اعلامیہ بھی جاری کیا گیا تھا جس کے مطابق یہ قسط بجٹ میں مالی مدد فراہم کرنے کے لیے دی گئی ہے۔

آئی ایم ایف سے ملنے والے اس پیکج کی ماضی کے حوالے سے بات کی جائے تو جولائی 2019 میں پروگرام کی پہلی قسط کی منظوری دی گئی تھی، ادائیگی سے توسیعی فنڈز کی سہولت کے تحت مجموعی طور پر دو ارب ڈالرز کی فراہمی کی گئی۔

آئی ایم ایف نے اپنے اعلامیے میں مزید کہا تھا کہ ایگزیکٹو بورڈ نے پاکستان کی جانب سے اٹھائے جانے والے اقدامات کا جائزہ لینے کے بعد 50 کروڑ ڈالرز دینے کی منظوری دی ہے۔ آئی ایم ایف کے مطابق معیشت کو سہارا دینے کیلئے پاکستان کی پالیسیاں مبصرانہ رہیں جب کہ پاکستان نے شرح نمو میں اضافے اور ادارہ جاتی اصلاحات کیلئے بھی جارحانہ اقدامات کیے۔

آئی ایم ایف نے اعلامیے میں اس بات پر بھی زور دیا گیا تھا کہ حکومتی ملکیتی کمپنیوں کی کارکردگی کو بہتر اور شفاف بنانا ہوگا۔ پاکستان کو مزید اصلاحات سے معاشی اعتماد اور نجی سرمایہ کاری کو تقویت دینا ہوگی اور کاروباری ماحول کو بہتر کر کے روزگار کے مواقع پیدا کرنا ہوں گے۔

اس کے علاوہ عالمی مالیاتی ادارے نے یہ بھی مطالبہ کیا تھا کہ منی لانڈرنگ اور تخریبی کاری میں استعمال ہونے والے پیسوں‌ کی روک تھام کے ایکشن پلان پر پاکستان کو مکمل عمل اور انسداد بدعنوانی کے اداروں کے مطالبات کو پورا کرنا ہوگا۔ تاہم پاکستان نے آئی ایم ایف کے متعدد مطالبات نہ صرف تسلیم کیے بلکہ ان پر عملدرآمد کر کے کامیابی کے ساتھ یہ پیکج حاصل کر لیا ہے۔


Featured Content⭐


24 گھنٹوں کے دوران 🔥


From Our Blogs in last 24 hours 🔥


>