ملکی زرمبادلہ کے ذخائر 4 سال کی بلندترین سطح پر

کرونا وائرس کے باوجود غیر ملکی سرمایہ کاری میں ریکارڈ اضافہ

یورو بانڈز کی نیلامی کے حکومتی فیصلے کے ثمرات، زرمبادلہ کے ذخائر4 سال کی بلندترین سطح پر آ گئے

اسٹیٹ بینک آف پاکستان کے مطابق 2.5 ارب ڈالر کے یورو بانڈز کی نیلامی کے بعد زرمبادلہ کے ذخائر میں نمایاں اضافہ ہوا۔

مرکزی بینک کے مطابق نیلامی کے بعد زرمبادلہ کے ذخائر 16 ارب 10 کروڑ 64 لاکھ ڈالر کی سطح پر آگئے ہیں۔ جب کہ کمرشل بینکوں کے پاس 7 ارب 11 کروڑ 39 لاکھ ڈالر موجود ہیں۔

زرمبادلہ کے مجموعی ذخائر کی مالیت 23 ارب 22 کروڑ ڈالر کی سطح پر پہنچ گئی ہے۔ 9 اپریل کو ختم ہونے والے ہفتہ کے دوران سرکاری ذخائر میں 2 ارب 57 کروڑ 90 لاکھ ڈالر کا اضافہ ریکارڈ کیا گیا۔

مرکزی بینک نے بتایا کہ یوروبانڈز کی نیلامی کے حکومتی فیصلے کے یہ ثمرات سامنے آئے ہیں کہ سرکاری ذخائر جولائی 2017 کے بعد بلند ترین سطح پر آگئے ہیں۔

خیال کیا جا رہا تھا کہ یورو بانڈز کی نیلامی اور آئی ایم ایف پروگرام سے قسط ملنے کے بعد پاکستان کے زرمبادلہ کے سرکاری زخائر میں 3 ارب ڈالر تک کا اضافہ ہوگا جس کے بعد زرمبادلہ کے سرکاری ذخائر کی مالیت 16 ارب ڈالر سے تجاوز کر جائیں گے۔

یاد رہے کہ پاکستان نے 6 فیصد شرح سود پر 5 سال کی مدت کے لیے ایک ارب ڈالر، 10 سال کی مدت کے لیے 7.37 فیصد شرح سود پر ایک ارب ڈالر جبکہ 30 سال کی مدت کے لیے 8.87 فیصد شرح سود پر 50 کروڑ ڈالر کے یورو بانڈذ فروخت کیے ہیں۔


Featured Content⭐


24 گھنٹوں کے دوران 🔥


From Our Blogs in last 24 hours 🔥


>