ملکی صنعتی پیداوار کا رجحان کیا ہے؟کس صنعت میں اضافہ اور کس میں کمی ہوئی؟

ملکی صنعتی پیداوار کا رجحان کیا ہے؟کس صنعت میں اضافہ اور کس میں کمی ہوئی؟

ملک کے ادارہ شماریات نے نئے اعدادوشمار جاری کیے ہیں جن کے مطابق ماہانہ بنیادوں پر بڑی صنعتوں کی پیداوار میں 4.15 فیصد کی کمی ہوئی ہے۔ آٹو موبائل، سیمنٹ مصنوعات اورچینی کی پیداوار میں کمی کے باعث گزشتہ برس دسمبر اور نومبر میں ایل ایس ایم پیداوار میں 2 ہندسوں کی نمو کے بعد جنوری سے سست روی دیکھنے میں آئی ہے۔

رواں مالی سال کے ابتدائی 8 ماہ یعنی جولائی سے فروری تک کے عرصے میں مجموعی طور پر ایل ایس ایم 7.45 فیصد بڑھی۔ تعمیرات، ٹیکسٹائل، اشیائے خورو نوش، کیمیکلز، غیر دھاتی معدنی مصنوعات، آٹو موبائل اور دوا سازی کے شعبے میں مہینوں تک کمی دیکھی گئی تاہم جولائی 2020 سے بہتری واپس آنے لگی۔

ادارہ شماریات کی پیداواری سرگرمیوں کی منظر کشی ظاہر کرتی ہے کہ بڑی صنعتوں کی پیداوار کے 15 میں سے 8 ذیلی شعبوں میں فروری کے دوران اضافہ ہوا۔ کم شرح سود اور خام مال پر ڈیوٹیز کی کمی سے موجودہ مالی سال میں معاشی سرگرمیاں مزید بڑھنے کی توقع ہے۔ آئل کمپنیز ایڈوائزری کمیٹی کے ماتحت 11 اشیا کی پیداوا فروری کے دوران سالانہ بنیاد پر 42.66 فیصد بڑھی۔

جبکہ وزارت صنعت و پیداوار کے ماتحت 36 اشیا کی پیداوار میں 3.16 فیصد ، پنجاب بیورو آف کیلکولیشن کے اعداد و شمار کی رپورٹ کردہ 65 اشیا میں 4.83 فیصد اضافہ ہوا۔ آٹو موبائل سیکٹر میں سے ٹرکوں اور بسز کو نکال کر ذیلی شعبہ جات میں فروری کے دوران گزشتہ برس کی نسبت بڑی نمو دیکھی گئی۔

آٹوموبائل سیکٹر میں ہی ٹرکوں کی پیداوار میں 17.01 فیصد جبکہ بسوں میں 19.70 فیصد کمی دیکھی گئی۔ ٹریکٹرز کی پیداوار 42.47 فیصد، جیپوں اور کاروں کی 37.24 فیصد، ایل سی ویز کی 37.19 فیصد اور موٹر سائیکلوں کی پیداوار اس ماہ میں 16.85 فیصد بڑھی۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >