گزشتہ ہفتے ڈالر کے مقابلے میں روپے اور سٹاک مارکیٹ کی کیا صورتحال رہی؟

گزشتہ ہفتے زرمبادلہ میں کمی کا رحجان رہا،زرمبادلہ کی دونوں مارکیٹوں میں گزشتہ ہفتے بھی ڈالر، پاؤنڈ، یورو اور ریال کی قدرمیں اتارچڑھاؤ کے بعد تنزلی رہی،برآمدی شعبوں میں زرمبادلہ کی ترسیلات سے مارکیٹوں میں ڈالر کی رسد میں اضافے سے روپیہ مستحکم رہا جب کہ کورونا کی روک تھام کیلئے ملک میں سخت لاک ڈاون کے خطرے کے باعث نٸی درآمدی ایل سیز کھلنے کے حجم میں بھی کمی دیکھنے میں آئی۔

وزیر اعظم کے دورہ سعودیہ میں سعودی حکومت سے 50 کروڑ ڈالر کے نٸے معاہدے کی خبرسے بھی روپے کی قیمت میں اضافہ ہوا، ہفتہ وار کاروبار کے دوران انٹربینک و اوپن مارکیٹ میں ڈالر کی قدر153روپے گرگئی،انٹربینک مارکیٹ میں ڈالر کی قدراتارچڑھاؤ کے بعد مجموعی طور پر 1 روپیہ 18 پیسے کم ہو کر152 روپے27 پیسے پر بند ہوا،اوپن کرنسی مارکیٹ میں ڈالر کی قدر 1روپے 10 پیسے سے کم ہو کر 152 روپے 80 پیسے ہوگئی۔

برطانوی پاؤنڈ کے انٹربینک ریٹ 1روپے 93 پیسے کمی کے بعد 212روپے 02 پیسے ہوگئی، جبکہ اوپن مارکیٹ میں برطانوی پاؤنڈ کی قدر1 روپے 50 پیسے کمی کے بعد 213 روپے 50 پیسے ہوگئی۔

انٹربینک میں یورو کرنسی کی قدر 1روپے 91 پیسے کم ہو کر 183 روپے 94 پیسے ہوگئی، جبکہ اوپن مارکیٹ میں یورو کی قدر3روپے 50 پیسے کم ہوکر183 روپے ہوگئی،انٹربینک مارکیٹ میں سعودی ریال کی قدر 31پیسے گھٹ کر 40 روپے 60 پیسے ہوگئی جب کہ اوپن مارکیٹ میں سعودی ریال کی قدر 40 پیسے کمی کے بعد 40 روپے 60 پیسے ہوگئی ۔

گزشتہ ہفتے پاکستان سٹاک ایکس چینج میں جمعرات کو بھی تیزی کا رجحان برقرار رہا اور پاکستان بھارت میں کرونا وبا کی وجہ سے چھائی مندی کے بادل چھٹ گئے۔ جمعہ کے روز پاکستان سٹاک مارکیٹ 213 پوائنٹس اضافے کے ساتھ بند ہوئی اور انڈیکس 45174 ریکارڈ کیا گیا۔

پاکستان سٹاک ایکسچینج میں ہفتے کے پہلے دن مندی،21ارب سے زائد سرمایہ ڈوب گیا لیکن اسکے بعد بقیہ 4 کاروباری روز میں ، 1100 پوائنٹس کا اضافہ دیکھنے میں آیا جس کی وجہ حکومت کے کرونا سے متعلق بروقت اقدامات، وزیراعظم کا دورہ سعودی عرب، غیر ملکی برآمدات اور ترسیلات زر میں اضافہ بتائی جارہی ہیں۔


Featured Content⭐


24 گھنٹوں کے دوران 🔥


From Our Blogs in last 24 hours 🔥


>