پاک چین آزادانہ تجارتی معاہدے کے مثبت اثرات،پاکستانی برآمدات بڑھ گئیں

پاک چین آزادانہ تجارتی معاہدے کے مثبت اثرات،پاکستانی برآمدات بڑھ گئی

یکم جنوری سے چین پاکستان آزادانہ تجارت کے معاہدے کے دوسرے مرحلہ پر عملدرآمد شروع ہوا اور اب اس معاہدے کے مثبت اثرات سامنے آنے لگے، رواں جنوری تا مارچ کے دوران چین جانے والی پاکستانی برآمدات میں 64 فیصد اضافہ سامنے آیا۔

بیجنگ میں پاکستانی سفارتخانہ کے کمرشل قونصلر بدر الزمان نے بتایا کہ پاک چین آزادانہ تجارت کے معاہدے کے دوسرے مرحلے پر عمل درآمد کا آغاز یکم جنوری کو ہوا تھا جس کے بعد رواں سال کی پہلی سہ ماہی کے دوران چین جانے والی قومی برآمدات 64 فیصد بڑھی ہیں۔

چائنہ اکنامک نیٹ کی رپورٹ کے مطابق چین کی درآمدی مارکیٹ کا حجم دو کھرب ڈالر سے زائد ہے جس سے پاکستان بھرپورمستفید ہوسکتاہے، بدر الزمان نے چین کی بڑی درآمدی مارکیٹ سے مستفید ہونے کیلئے تجارتی برادری کے کردار پر زور دیا۔

پاکستان اور چین پہلے خصوصی اقتصادی زون (ایس ای زیڈ) اور سماجی اقتصادی ترقی، آزاد تجارت کے نئے معاہدے اور مفاہمت کی یادداشتوں پر دستخط کرنے سے پاک-چین اقتصادی راہداری (سی پیک) کے نئے دور میں شامل ہوگئے تھے،مفاہمت کی یادداشتوں اور آزادانہ تجارتی معاہدے (ایف ٹی اے) کے دوسرے مرحلے پر دستخظ وزیر اعظم عمران خان کے 6 ماہ میں دوسری مرتبہ دورہ چین کے اختتام پر ہوئے تھے۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >