دنیا کے بڑے مالیاتی ادارے جے پی مورگن نے سرمایہ کاروں کو پاکستان میں سرمایہ کاری کا مشورہ دے دیا۔

دنیا کے بڑے مالیاتی ادارے”جے پی مورگن” کی پاکستانی معیشت کی تعریف
دنیا کے بڑے سرمایہ کاری کے مالیاتی ادارے "جے پی مورگن” نے اپنے سرمایہ کاروں کو پاکستان میں انویسٹمنٹ کرنے کی تجویز دیتے ہوئے کہا ہے کہ پاکستان سرمایہ کاری کیلئے بہترین ملک ہے۔
دنیا کے بڑے سرمایہ کاری کے ادارے جے پی مورگن نے پاکستانی معیشت کے حوالے سے اپنی رپورٹ جاری کردی ہے جس میں کہا گیا ہے کہ پاکستان کی جی ڈی پی گروتھ رواں برس4اعشاریہ7 فیصد تک رہے گی۔
جے پی مورگن نے اپنی رپورٹ میں پاکستانی معیشت کے حوالے سے چیدہ چیدہ خصوصیات کا ذکر کیا ،جے پی مورگن کی رپورٹ کےمطابق پاکستانی جی ڈی پی کا حجم مالی سال 2022 کےدوران329 بلین امریکی ڈالر تک پہنچنے کا امکان ہے، جی ڈی پی کے تناسب سے کرنٹ اکاؤنٹ خسارہ مسلسل کم ہوگا جبکہ ترسیلات زر میں کمی کی وجہ سے اشیاء خوردونوش کی قیمتوں میں اضافے کا خدشہ بھی ظاہر کیا گیا ہے۔
دنیا کے بڑے مالیاتی ادارے نے اپنی رپورٹ میں اپنےسرمایہ کاروں کو مشورہ دیا کہ اس وقت پاکستان سرمایہ کاری کیلئے آئیڈیل ملک ہے کیونکہ پاکستان میں گورنمنٹ سیکیورٹیز میں رسک فیکٹر نہ ہونے کے برابر ہے۔
اس رپورٹ کو شیئر کرتے ہوئے وزیر مملکت برائے اطلاعات و نشریات فرخ حبیب کا کہنا تھا کہ جے پی مورگن نے اپنی رپورٹ میں سرمایہ کاروں سے کہا ہے کہ پاکستان میں سرمایہ کاری کریں کیونکہ یہاں معاشی حالات بہتر ہورہے ہیں۔

انہوں نے مزید کہا کہ جے پی مورگن نے اپنی رپورٹ میں مالی سال 2021 میں پاکستانی جی ڈی پی گروتھ کی شرح کو 4اعشاریہ 7 فیصد جبکہ آئندہ مالی سال میں معاشی حجم کے 329 ارب ڈالر تک پہنچنے کی پیشگوئی کی ہے۔
فرخ حبیب نے مزید کہا کہ جے پی مورگن نے پیشگوئی کی ہے کہ رواں برس پاکستان کا بجٹ خسارا7اعشاریہ1 فیصد جبکہ آئندہ برس 5 اعشاریہ 9 فیصد تک رہے گا، قرضوں کے تناسب سے جی ڈی پی کی شرح81اعشاریہ6 فیصد پر آجائے گی جو 2020 میں 87اعشاریہ6 فیصد پر تھی۔


Featured Content⭐


24 گھنٹوں کے دوران 🔥


From Our Blogs in last 24 hours 🔥


>