ملکی زرمبادلہ کےذخائر تاریخ کی بلند ترین سطح پر پہنچ گئے

ملکی زرمبادلہ کےذخائر تاریخ کی بلند ترین سطح پر پہنچ گئے

ملکی زرمبادلہ کےذخائرتاریخ کی بلند ترین سطح پر پہنچ گئے۔اسٹیٹ بینک کےمطابق مرکزی بینک کو یورو بانڈ کی فروخت سے حاصل ہونے والے ایک ارب چار کروڑ موصول ہوئے،جس سے ملکی تاریخ میں پہلی بار زر مبادلہ کے ذخائر 25 ارب 10 کروڑ ڈالر کی بلند ترین سطح پر پہنچ گئے ہیں۔

اسٹیٹ بینک نے اعداد و شمار میں بتایا کہ 16 جولائی کو ختم ہونے والے ہفتہ میں اسٹیٹ بینک کے پاس 18 ارب ڈالر کے زرمبادلہ کے ذخائر موجود تھے،جبکہ ملک کے دیگر بینکوں کے پاس سات ارب سات کروڑ 73 لاکھ ڈالر زرمبادلہ ذخائر تھے،قرضوں کی ادائیگی کے بعد گذشتہ کاروباری ہفتے کےاختتام پر زرمبادلہ کے ذخائرچوراسی کروڑ ڈالر اضافے کے بعد پچیس ارب بارہ کروڑ اسی لاکھ ڈالر تک پہنچ گئے۔

دوسری جانب پاکستان کی حقیقی موثر شرح مبادلہ جون کے دوران انڈیکس میں بہتری حاصل کرتے ہوئے 99 اعشاریہ آٹھ پانچ پوائنٹس پر پہنچ گئی، جس سے اب ملک کو برآمدات میں فائدہ جبکہ درآمدات مہنگی ہوگی، کرنسیوں کے مقابلے میں روپے کی قدر میں بھی کمی ہوگی۔

پاک کویت انوسٹمنٹ کمپنی کے ہیڈ آف ریسرچ سمیع اللہ طارق کے مطابق موثر زرمبادلہ میں بہتری سے اب برآمدات کو مزید فروغ حاصل ہوگا جبکہ غیر ضروری درآمدات میں کمی آئے گی، ملک کے رواں جاری کھاتہ کم ہوگا جو جون میں مارکیٹ کی توقع کے برخلاف ایک ارب 60 لاکھ ڈالر رہا،اسٹیٹ بینک کی رپورٹ کے مطابق جون کے اختتام پاکستان کی حقیقی شرح مبادلہ انڈیکس پر 100 سے نیچے آگئی تھی،اس سے قبل کے مارچ، اپریل اور مئی میں یہ شرح 100 سے اوپر رہی۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >