ناچ گانے،بھیک مانگنے سے اسلام تک کا سفر،خواجہ سرا اپنی کمیونٹی کیلئے مثال بن گیا

پاکستان میں خواجہ سراؤں کی  بس یہی پہچان دنیا کے سامنے لائی گئی ہے کہ یہ ناچتے گاتے  ہیں یا بھیک مانگتے ہیں،  آج تک کسی نے اس طبقے کے مسائل یا ان کی دیگر سرگرمیوں پر توجہ دینے کی کوشش ہی نہیں کی۔

پاکستان میں خواجہ سرا بھی ملک کی ترقی میں اپنا کردار ادا کرنے کی خواہش رکھتے ہیں مگر معاشرے کا ان سے امتیازی  سلوک انہیں آگے بڑھنے ہی نہیں دیتا اور یہ مجبوراً ناچنے گانے یا بھیک مانگنے پر مجبور ہوجاتے ہیں۔

لیکن مایوسی کفر ہے اور خدا ہمت کرنے والوں کا ہمیشہ ساتھ دیتا ہے ، رانی خان  نے ڈانس  کرنے اور بھیک مانگنے کے پیشے کو ترک کرنے کا فیصلہ کیا  تو اس نے جو راستہ چنا وہ اللہ کے کلام پاک کی تعلیم حاصل کرنا تھا جس نے نہ صرف اس ایک خواجہ سراء کیلئے بلکہ اس پورے طبقے کیلئے ایک شمع جلادی ہے ۔ باعزت زندگی گزارنے کا فیصلہ کرنا اور پہلا قدم اٹھانا مشکل ہوتا ہے  باقی راستہ اللہ خود آسان کردیتا ہے۔

یہ کہانی ہے  رانی خان کی جو اسلام آباد سے تعلق رکھتی ہے،  گزر بسر کرنے کیلئے اس نے بچپن میں بھیک مانگی ، شادی بیاہوں میں رقص کیا اور اپنا گزارا کرتی رہی، اس کی زندگی میں تبدیلی  ایک خواب کی  وجہ سے آئی  جس   میں اس  کی کچھ عرصہ پہلے فوت ہونے والی سہیلی  نے اسے ڈانس ترک کرنے کا کہا۔

رانی خان نے ڈانس ترک کرنے کا فیصلہ کیا اور اپنی توجہ دینی تعلیم  کی جانب مبذول کرنا شروع کردی ، اس سفر میں  انہیں اتنا ذہنی سکون میسر آیا کہ انہوں نے اپنے طبقے کے لوگوں کو  قرآن پاک کی تعلیم کے زیور سے آراستہ کرنے کا فیصلہ کیا۔

رانی خان نے نہ صرف قرآن پاک کی تعلیم حاصل کی بلکہ اپنا ایک مدرسہ بھی قائم کیا جہاں خواجہ سراؤں  کو قرآن کی تعلیم دی جاتی ہے، اس مدرسے کو حکومت کی جانب سے کسی بھی قسم کا تعاون میسر نہیں ہے تاہم رانی خان خود اپنی مدد آپ کے تحت اس مدرسے میں  خواجہ سراؤں کو نہ صرف قرآن کی تعلیم دے رہی ہیں بلکہ سلائی کڑھائی بھی سکھارہی ہیں تاکہ خواجہ سراء بھیک مانگنے یا ڈانس کرنے کے بجائے کوئی باعزت شعبہ اختیار کرکے اپنا گزر بسر کرسکیں۔

  • Amazing and MashAllah..Bouhat afsoos hota hai hum transgenders ko insaan he nahi samjtay..Government should keep giving special incentives to them and bring them to mainstream by free education and giving special employment opportunities to them..


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >