عمران خان 121 سال پرانے مصنوعی نہر کے منصوبے کا افتتاح کریں گے

کارکردگی کے حوالے سےشدید تنقید کی زد میں رہنے والی تحریک انصاف کی حکومت کے لیئے معیشت کے بعد اب ترقیاتی کاموں کے حوالے سے بھی اچھی خبریں آنا شروع ہوگئی ہیں۔

وزیراعظم عمران خان کل جہلم جلال پور میں 121 سال پرانے مصنوعی نہر کے زرعی منصوبے کا افتتاح کریں گے جس میں 115 کلو میٹر لمبی نہر بنے گی جس کی تکمیل 48 ارب روپے کی لاگت سے چار سال میں ہوگی منصوبے کی تکمیل کے لئے ایشیائی ترقیاتی بینک قرض فراہم کرے گا یہ مصنوعی نہر بنجر زمین زرخیز بنا کر علاقے کی تقدیر بدل دے گی۔ یہ نہر رسول پور بیراج سے نکلے گی جس سے ایک لاکھ ستر ہزار ایکڑ رقبہ سیراب ہوگا اور کلر کہار کے قریب اس نہر کے لئے موٹروے کے نیچے سے انڈر گراؤنڈ راستہ بنایا جائے گا۔ اس نہر کا پانی جہلم پنڈ دادن خان اور ضلع خوشاب کو سیراب کرے گا تین اضلاع میں ایک لاکھ خاندان یعنی تقریبا ساڑھے پانچ لاکھ لوگ براہ راست مستفید ہوسکیں گے۔

یوں تو پاکستان میں اور بھی مصنوعی نہریں بنائی جاچکی ہیں لیکن یہ منصوبہ بہت بڑا اور قدیم ہونے کی وجہ سے عالمی اہمیت رکھتا ہے وزیراعظم عمران خان کل جلال پور جہلم میں اس کا افتتاح کررہے ہیں اگر اس منصوبے کی تاریخ پر نظر ڈالیں تو پتہ چلتا ہے کہ برطانوی راج کے دوران ملکہ وکٹوریہ کی جانب سے جہلم کے لوگوں کے لئے بطور تحفہ دیا گیا تھا لیکن فنڈز نہ ہونے کی وجہ سے مختلف ادوار میں یہ منصوبہ مکمل نہ ہوسکا بلکہ اس پر کام کا آغاز ہی نہ ہوسکا لیکن اب وزیراعظم عمران خان کی پوری ٹیم خاص طور پر جہانگیر ترین اور فواد چوہدری کی بھرپور دلچسپی سے اس منصوبے کا آغاز ہونے جارہا ہے قیام پاکستان سے بھی پرانے اس منصوبہ کے افتتاح کے لئے ایک بڑی اور پروقار تقریب ہورہی ہے جس میں وزیراعلی پنجاب ، جہانگیر ترین اور فواد چوہدری بھی شرکت کرینگے۔

یہ مصنوعی نہر بنجر زمین کو سیراب کرنے کے ساتھ ساتھ علاقے کی قسمت بھی تبدیل کرنے کا ایک بڑا ذریعہ ہوگا خاص طور پر یہاں پر بنجر پڑی سینکڑوں ایکڑ اراضی کو یہ منصوبہ سیراب کرنے جارہا ہے اس کے علاوہ یہ منصوبہ 17 سے 18 دیہاتوں تک میٹھا پانی پہنچانے کا ذریعہ بھی بنے گا۔1898 سے یہ منصوبہ شروع ہوناتھا لیکن اس کے بعد صرف پرویز مشرف دور میں اس منصوبے پر کام کا آغاز کیا گیا لیکن 2008 میں پھر اس پر کام روک دیا گیا تھا جو کہ موجودہ حکومت اب دوبارہ شروع کرنے جارہی ہے۔


Featured Content⭐


24 گھنٹوں کے دوران 🔥


From Our Blogs in last 24 hours 🔥


>