’’شادی کے بعد بھی لوگ خودکشی کررہے ہیں تو پھر شادی پر بھی پابندی لگادی جائے‘‘

پب جی پر عارضی پابندی، کھیلنے والےناخوش، والدین خوش

پی ٹی اے کی جانب سے پب جی گیم پرعارضی پابندی لگائے جانےکے فیصلے سے اس گیم کے شوقین افراد کو بڑا گہرا صدمہ پہنچاہے۔۔ سوشل میڈیا ہو یا کوئی بھی جگہ اسی حوالے سے بات کررہے ہیں۔ جب عوام سےبراہ راست اس حوالے سے پوچھا گیا تو پب جی کے شوقین غصہ ہوئے لیکن اس گیم سے تنگ افراد کو فیصلہ درست لگا۔

ایک شہری کے نزدیک یہ سراسر غلط فیصلہ ہےکیونکہ جو لوگ زیادہ وقت گھر میں گزارتے ہیں ان کیلئے پب جی ایک اچھا کھیل ہے۔

دوسرےشہری نے بھی پابندی کے فیصلے کی مخالفت کی اور کہا کہ پب بھی بالکل ایڈکشن نہیں ہے کیونکہ آج کل جو حالات چل رہے ہیں اس میں بچے کیا کریں۔ پب جی ہی کھیل لیتے ہیں۔

ایک اور نوجوان نے کہا کہ پی ٹی اے کا فیصلہ سرا سر غلط ہے، کیونکہ پوری دنیا گیمنگ سے پیسہ کمارہی ہے، اور پاکستان میں کوئی حادثہ ہوجائے تو فوراً گیم بند کردیتے ہیں۔

ایک شخص تو پی ٹی اے کے فیصلے سے اتنا مایوس ہوا کہ ایک الگ ہی مشورہ دے ڈالا، کہا شادی کے بعد بھی لوگ خودکشی کررہے ہیں تو پھر شادی پر بھی پابندی لگادی جائے اگر ایسا لگتا ہے پب جی کھیلنے سے لوگ خود کشی کررہے ہیں۔

اس گیم سے پریشان حال والد نے خوشی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ بالکل پب جی بند ہوجانا چاہئے کیونکہ اسکول کی چھٹیاں ہیں بچے فجر تک یہی گیم کھیلتے رہتے ہیں۔ پڑھائی میں بالکل دلچسپی نہیں ہے۔

پب جی گیم کھیلنے سے منع کرنے کے باعث ملک میں کئی نوجوان غصے میں اپنی زندگی کا خاتمہ کرچکے ہیں، خودکشی کے واقعات بڑھتے دیکھ کر پی ٹی اے نے اس گیم پر عارضی پابندی لگانے کا فیصلہ کیا ہے۔

واضح رہے کہ اس پر سیاست ڈاٹ پی کے فیس بک پر ایک سروے کرایا گیا ہے جس کے تاحال مطابق 82 فیصد عوام نے پابندی کے حق میں ووٹ دیا جبکہ 18 فیصد نے مخالفت کی۔

سیاست ڈاٹ پی کے آفیشل ٹوئٹر اکاؤنٹ پر کرائے گئے سروے کے مطابق 85.3فیصد عوام نے پابندی کے حق میں جبکہ 14.7 فیصد نے مخالفت میں رائے دی۔

  • او جاہل کے بچو۔۔۔۔تمہاری منطق کے حساب سے تو انسان دنیا میں آنے کے بعد کھبی بھی خودکشی کرسکتا ہے۔۔ تو کیا انسانوں کی پیدائش پر پابندی لگائی جائے۔۔۔

    جاہلوں کوئی  ڈھنگ کا کام کرو۔۔ اپنا قیمتی وقت کسی کام کو سیکھنے پر لگاو۔۔ دین کا علم حاصل کرو۔۔ غریبوں و ضرورت مندوں کی مدد کرو۔۔۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >