ننھی زینب کے قاتل کی پھانسی کا آنکھوں دیکھا حال والد کی زبانی

میں نے حکام سے کہا میں پھانسی سے پہلے عمران سے کچھ سوالات کرنا چاہتا ہوں۔۔۔۔۔۔ میں حیران رہ گیا جب اسے پھانسی کیلئے لایا گیا تو وہ بڑے اعتماد سے خود چل کر آیا، اس کے چہرے پر بالکل خوف نہیں تھا۔ زینب کے والد سے سنیے عمران کی پھانسی کا آنکھوں دیکھا حال

زینب کے والد نے کامران صدیقی کو بتایا کہ ایک مجسٹریٹ لاہور سے اور دوسرا قصور سے تھا جن کی ڈیوٹی تھی کہ انکی موجودگی میں زینب کے قاتل عمران کو پھانسی دی جائے، انہوں نے ہمیں بلایا اور کہا کہ عمران کو پھانسی دینی ہے ، میں نے ان سے بات کی کہ میں چاہتا ہوں کہ میری ان سے پہلے ملاقات کرائیں، میرے کچھ سوالات ہیں جو میں جاننا چاہتا ہوں، انہوں نے کہا کہ ٹھیک ہے آپکی ملاقات ہوجائے گی۔

زینب کےوالد کا مزید کہنا تھا کہ ہمیں ہائیکورٹ کی جانب سے کہا گیا کہ مجرم عمران کی پھانسی دیکھنے کیلئے آپ 12 لوگ جاسکتے ہیں لیکن ہم 4 گئے ، جب ہم گئے تو انہوں نے کہا کہ صرف آپکا بھائی عدنان ہی اندرجاسکتا ہے جو اس مقدمے کا مدعی تھا۔

میں حیران رہ گیا جب مجرم عمران کو پھانسی کیلئے لایا گیا تو وہ بڑے اعتماد سے خود چل کر آیا، اس کے چہرے پر بالکل خوف نہیں تھا۔ایک شخص جب اسے پتہ ہوتا ہے کہ وہ مرنیوالا ہے تو وہ پہلے ہی مرچکا ہوتا ہے، پولیس والے مجھے بتارہے تھے کہ ہم پھانسی والے لوگوں کو سٹریچر پر لیکر آتے ہیں لیکن عمران بڑے اعتماد سے چل رہا تھا۔چہرے پر اسکے کوئی ندامت نہیں تھی اور نہ ہی اس نے کوئی معافی مانگی۔

اپنے انٹرویو میں زینب کے والد نے اس پریس کانفرنس کا بھی تذکرہ کیا جس میں شہبازشریف، رانا ثناء اللہ قہقہے لگارہے تھے۔ زینب کے والد سے پوچھا گیا کہ جب وہ قہقہے لگارہے تھے تو آپکے دل پر کیا گزری ؟ جس پر زینب کے والد نے کہا کہ مجرم پکڑا گیا وہ اس بات کی خوشی منارہے تھے۔یہ نہ صرف ہمارے لئے بلکہ پوری قوم کیلئے تکلیف دہ معاملہ تھا۔ لوگ ہمارے گھر افسوس کیلئے آرہے تھے اور یہ تالیاں بجارہے تھے، تالیاں کس چیز کی بجارہے تھے؟ کیا انہوں نے کوئی کپ جیتا تھا؟ مجرم پکڑنا آپکی ذمہ داری تھی۔

میری بیٹی زینب سے پہلے 11 بچیوں پر ظلم ہوا، 12ویں میری بچی تھی، پہلی بچی پر قانون کیوں حرکت میں نہیں آیا؟ اگر پہلی بچی پر قانون حرکت میں آتا تومیری اور 10 بچیاں بچ گئی ہوتیں۔ہم اپنی تکلیف میں مبتلا ہیں لیکن وہ تالیاں ضروری نہین تھیں۔

  • Sawal kya kiye thay us shaitaan say zainab k walid nay? Uskee saza bohot dardnaak hone chahiye thee.. Phansee bohot aasaan hai…Allah usay jahannum mein bhee azab dai ga…..is baat ko kitnay saal ho gae per baicharee ye muzloom bachee bhoolti nahe mujhey….

    Allah amin sb or unki biwi ko sabar dai or zainab ka gham bhula dai or baqi insanon ki bhee hifazat farmei

  • پولیس نے ایک بندے کو پھانسی دے کر پولیس کی سرپرستی میں بچیوں کو ریپ کرنے والے باقی گینگ کے اراکین کو بچا لیا جو اب بھی قصور اور اس کے گرد و نواح میں یہی گھناونا کام کررہے ہیں


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >