28 سالہ نوجوان کے معدے سے سات ماہ بعد موبائل فون برآمد

28 سالہ نوجوان کے معدے سے سات ماہ بعد موبائل فون برآمد

غیر ملکی خبر رساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق مصر کے دارالحکومت قاہرہ کے یونیورسٹی ہسپتال کے ماہر ڈاکٹرز کی ٹیم نے دو گھنٹے تک طویل آپریشن کرکے 28 سالہ نوجوان کے معدے سے موبائل فون نکال لیا،جو سات ماہ تک نوجوان کے معدے میں موجود رہا۔

نوجوان کے معدے سے موبائل فون نکالنے والے ڈاکٹر محمد الجزار کا اس حوالے سے کہنا تھا کہ لڑکے کی خوش قسمتی یہ ہے کہ اس کے معدے میں موبائل فون کی بیٹری تحلیل نہیں ہوئی، اگر موبائل فون کی بیٹری اس کے معدے میں تحلیل ہوجاتی تو اس میں موجود کاربن اس کے پورے جسم میں پھیل سکتا تھا جس سے اس کی موت بھی واقع ہو سکتی تھی۔

28 سالہ نوجوان کے معدے سے سات ماہ بعد موبائل فون برآمد

خبر رساں ادارے کے نمائندے سے بات کرتے ہوئے ڈاکٹر الجزار کا مزید کہنا تھا کہ لڑکے نے اپنے دوستوں پر رعب جمانے کے لئے موبائل فون اس امید پر نگل لیا تھا کہ الٹی آنے سے موبائل فون اس کے پیٹ میں سے نکل جائے گا لیکن ایسا نہیں ہوا اور موبائل فون اس کے معدے میں ہی رہ گیا۔

28 سالہ نوجوان کے معدے سے سات ماہ بعد موبائل فون برآمد

ڈاکٹر الجزار کا کہنا تھا کہ موبائل نگلنے کے بعد لڑکے کے پیٹ میں شدید درد ہونے لگا لیکن اس نے اپنے گھر والوں کے خوف سے ان کو کچھ بھی نہیں بتایا، لیکن سات ماہ بعد لڑکے کی حالت مزید خراب ہونے پر جب اسے ایمرجنسی کے لئے ہسپتال لایا گیا تو ایکسرے کرنے سے معلوم ہوا کہ اس کے پیٹ میں موبائل فون ہے، جسے کامیاب آپریشن کر کے نکال لیا گیا ہے۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >