برطانوی شو میں اپنی آواز سے سحر طاری کرنیوالی پاکستانی گلوکارہ کے ججز بھی معترف

برٹین گاٹ ٹیلنٹ نامی برطانوی ٹی وی شو میں اپنی آواز سے سحر طاری کرنے والی پاکستانی گلوکارہ کے ججز بھی معترف

رواں سال چلنے والی برٹین گاٹ ٹیلنٹ کے سیمی فائنل میں 15 سالہ پاکستانی گلوکارہ سیرین جہانگیر نے اپنی آواز سے ایسا سحر طاری کیا کے ججز اس کی آواز اور گائیکی کو ایک جادو، منفرد اور خاص عنایت کہنے پر مجبور ہو گئے۔

یاد رہے کہ سیرین جہانگیر وزیراعظم عمران خان کے دیرینہ دوست اور انگلینڈ سمیت یورپ بھر میں سرمایہ کاری کے ترجمان صاحبزادہ جہانگیر کی پوتی ہیں۔

پروگرام کے میزبان اینٹ اور ڈیک کے مطابق جب سیرین نے اپنی پرفارمنس دی تو نہ صرف ہال میں خاموشی طاری تھی بلکہ اس پرفارمنس کے اینڈ پر حاضرین کی ایک بڑی تعداد نم آنکھوں کے ساتھ داد دے رہی تھی۔ وہ اپنے پیانو سے جیسے ہی پیچھے ہٹیں تو ان کے والد کفیل جہانگیر ان کو سٹیج کے درمیان تک لائے اور ہال میں موجود ججز سمیت ہر ایک شخص نے اٹھ کر انہیں داد دی۔

امینڈا ہولڈن نے کہا کہ یہ پرفارمنس ایک جادو تھا اور اس وقت سیرین انہیں کسی فرشتے کی طرح لگ رہی ہیں جن کے سامنے انہیں اپنا آپ کمزور محسوس ہو رہا ہے اور لگتا ہے کہ انہوں نے آج کچھ انوکھا سن لیا ہے۔
شو میں موجود سائمن کوویل کی جگہ پر جج کی ذمہ داریاں نبھانے والے ایشلے بینجو نے کہا اس پرفارمنس کے لیے جادو کا لفظ ہی استعمال کیا جانا چاہیے کیونکہ جب وہ ان کا گانا سن رہے تھے تو کسی اور ہی جگہ پر پہنچ گئے تھے اور جیسے ہی گانا ختم ہوا تو ان کو احساس ہوا کہ نہیں وہ یہیں اپنی کرسی پر موجود ہیں۔

دو ماہ قبل شمالی لندن میں جیو نیوز کو دیئے گئے اپنے انٹرویو میں سیرین نے کہا تھا کہ ان کی زندگی اچانک سے اپنے کمرے میں بھائیوں کے ساتھ گانا گانے سے بدل کر اس شو تک اور پھر پوری دنیا تک پھیل گئی ہے جس کے لیے وہ بہت خوش ہیں۔ وہ اپنی آنکھوں سے دیکھ بھی نہیں سکتیں۔

انہوں نے انٹرویو میں بتایا کہ وہ کئی سال پہلے اپنے گھر میں عمران خان کے ساتھ ملاقات کر چکی ہیں تب ان کی ایک آنکھ سے نظر آتا تھا مگر بعد میں وہ مکمل اندھے پن کا شکار ہو گئی تھیں۔

ان کی پرفارمنس کے بارے میں جب ان کے دادا صاحبزادہ جہانگیر کو بتایا گیا تو انہوں نے بھی خوشی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ سکول سے چھٹیوں کے دوران وہ سیرین کے ساتھ پاکستان آئیں گے اور اپنے گاؤں جائیں گے جہاں ان کو سپیشل بچوں سے بھی ملاقات کرائیں گے جو کہ ان کا حوصلہ بڑھائے گا۔

  • This is what I wanted to say . Even her personality dress and culture nothing belongs to pakistan and shame on saying PAKISTANI. Hur foreigner ko apna pakistani label lagana chor duo. Walaiti botel main desi sharab ke mazay laina band karo . Sharem karo jhooti baqwaas kerna bhi band karo . Jootay maro jisnay ye thread send ki hay


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >