مجھے نہیں معلوم کہ میشا شفیع کو کس جگہ ہراساں کیا گیا، عفت عمر

مجھے نہیں معلوم کہ میشا شفیع کو کس جگہ ہراساں کیا گیا، عفت عمر

میشا شفیع کے خلاف ہتک عزت کیس: مجھے ٹھیک سے یاد نہیں کہ ہراسگی کا واقعہ کہاں پیش آیا، اداکارہ عفت عمر

تفصیلات کے مطابق ایڈیشنل سیشن جج امتیاز احمد کے کورٹ میں علی ظفر کی جانب سے اداکارہ و گلوکارہ میشا شفیع کے خلاف ہرجانہ کیس کی سماعت ہوئی، جس میں میشا شفیع کی گواہ اداکارہ عفت عمر کے علی ظفر کے خلاف دیئے گئے بیان پر جرح کی گئی۔

لاہور کی سیشن کورٹ میں کیس کی سماعت کے دوران علی ظفر کے وکیل کی جانب سے عفت عمر پر جرح کی گئی، جس میں اداکارہ نے کہا کہ مجھے میشا شفیع نے ہراسگی سے متعلق ٹویٹ کے بارے میں تفصیل سے بعد میں بتایا تھا، پہلے ان کی والدہ نے مجھے آگاہ کیا تھا، تاہم مجھے وہ جگہ ٹھیک سے یاد نہیں جہاں میشا شفیع کے ساتھ ہراسگی کا واقعہ پیش آیا تھا۔

اداکارہ کا اپنا بیان ریکارڈ کرواتے ہوئے کہنا تھا کہ جیمنگ سیشن کے دوران میشا نے حراسگی کے حوالے سے بتایا مگر ٹھیک طریقے یاد نہیں کہ کیا کہا، جس پر علی ظفر کے وکیل نے کہا کہ میشا شفیع مبینہ ہراسگی کے واقعے کے بعد بھی اپنے خاوند کے ساتھ علی ظفر کے گھر منعقدہ تقریب میں شرکت کرنے کے لئے گئیں تھی۔

علی ظفر کے وکیل کا سوال اٹھاتے ہوئے کہنا تھا کہ کس طرح سے کوئی خاوند اپنی بیوی کو ایسے شخص کے گھر میں تقریب میں شرکت کے لیے لے جا سکتا ہے؟ جس پر اداکارہ عفت عمر نے جرح میں بتایا کہ اسے اس بات کا علم نہیں کہ میشا شفیع اپنے خاوند کے ساتھ علی ظفر کے گھر گئی تھی یا نہیں۔

بعد ازاں عفت عمر کے بیان پر جرح جاری تھی کہ اداکارہ میشا شفیع کے وکیل نے عدالت سے کیس کی مزید سماعت یکم فروری تک ملتوی کرنے کی استدعا کی، جسے عدالت نے منظور کرتے ہوئے کیس کی مزید سماعت یکم فروری تک ملتوی کر دی اور عفت عمر پر جرح مکمل نہ ہو سکی۔

کیس کی سماعت ملتوی ہونے کے بعد کمرہ عدالت سے باہر نکلنے کے بعد گلوکار اور اداکار علی ظفر کے مداحوں کی جانب سے گلوکارہ میشا شفیع کے عدالت میں پیش نہ ہونے پر شدید احتجاج کیا گیا جبکہ احتجاج کرنے والے علی ظفر کے مداح نے جوڈیشل کمپلیکس کے گیٹ پر پلے کارڈ اٹھا کر احتجاج کیا اور مطالبہ کیا کہ علی ظفر کی طرح میشا شفیع بھی عدالت میں پیش ہوکر کیس کا سامنا کرے۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >