لاہور ہائیکورٹ،ججز کی تقرری بذریعہ امتحان کیس پر اپیل خارج: کتنے تجربے والا وکیل جج کیلئے اہل؟

لاہورہائیکورٹ کے دو رکنی بینچ نے درخواست گزار غلام یاسین بھٹی کی ججز تقرری کے لیے سی ایس ایس کا طریقہ کار اختیار کرنے کی اپیل خارج کرنے کا تحریری فیصلہ جاری کردیا۔

عدالت نے اپنے فیصلے میں کہا ہے کہ امتحانات اور انٹرویو کے ذریعے ججز کی تقرری آرٹیکل 175 اے کی روشنی میں عجوبہ ہے۔ آرٹیکل 175 اے کے علاوہ ججز کی تقرری کا کوئی بھی طریقہ اختیار کرنا آئین کے مینڈیٹ میں مداخلت ہوگا۔

عدالت نے جاری کردہ فیصلے میں یہ بھی کہا کہ قانون سازوں نے تقرریاں شفاف بنانے کے لیے یہ آرٹیکل 18ویں ترمیم کے ذریعے شامل کیا، لہٰذا عدالت ججز تقرری کے لیے سی ایس ایس کا طریقہ کار اختیار کرنے کی یہ اپیل خارج کرتی ہے۔

یاد رہے کہ درخواست گزار کا مؤقف تھا کہ ہائیکورٹ میں وکالت کا 10 سالہ تجربہ رکھنے والا ہر وکیل جج بننے کا اہل ہے۔

درخواست گزار وکیل نے یہ بھی کہا کہ امیدواروں کی درخواستیں طلب کرنے کا باقاعدہ طریقہ کار موجود ہونا چاہئے اور اس کے لیے سی ایس ایس کی طرز کا امتحان لیا جانا چاہیے۔

  • If parliament change the law it will help to eliminate political pic and choose and judges can perform better services if they are being elected through CSS successful candidate and will be liable for accountability.


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >