شربت کا ٹھیلا لگانے والے انجینئر عبدالملک کو تربوز کے شربت کا آئیڈیا کہاں سے ملا؟


سوشل میڈیا پر مشہور ہونےو الے انجینئر عبدالملک کا کہنا ہے کہ بھارت کے ایک مسلمان نوجوان سے متاثر ہوکر میں نے شربت کا ٹھیلا لگایا اوراپنے ٹھیلے کا نام بھی بھارتی نوجوان کے ٹھیلے کے نام سے ہی منسوب کیا ہے۔

نجی خبررساں ادارے سے خصوصی طور پر گفتگو کرتے ہوئے نوجوان عبدالملک کا کہنا تھا کہ دبئی سے ابتدائی تعلیم اور چین سے ایئرو ناٹیکل انجینئرنگ کرنے کے بعد میں اس امید پر پاکستان آیا تھا کہ یہاں نوکری کرکے اپنے ملک کی خدمت کرسکوں۔

انہوں نے کہا کہ 7 سال مسلسل کوششوں کے باوجود مجھے یہاں نوکری نہیں ملی ، نوبت یہاں تک پہنچی کہ بیوی اور تین بچوں کا پیٹ پالنے کیلئے میں نے ایک بھارتی مسلمان نوجوان کے شربت بیچنے کے آئیڈیا سے متاثر ہوکر یہ کام کرنے کا فیصلہ کیا۔

عبدالملک نے کہا کہ میں نے سوشل میڈیا پر ایک ویڈیو دیکھی جس میں ایک نوجوان”نفرت اور محبت کا شربت” کے نام سے تربوز کا شربت فروخت کرتا تھا، میں نے اسی نوجوان کی ترکیب استعمال کرتے ہوئے "محبت کا شربت” فروخت کرنا شروع کیا جو لوگوں کو بے حد پسند آنے لگا۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ سوشل میڈیا پر کلپ وائرل ہونے کے بعد دوردراز علاقوں سے بھی لوگوں نے میرےپاس آنا شروع کیا ، اب میں ایک سوشل میڈیا سٹار بن چکا ہوں اور پورے پاکستان میں لوگ مجھے پہنچانتے ہیں تو مجھے بہت خوشی محسوس ہوتی ہے، اب مجھے احساس ہوگیا ہے کہ اللہ اپنے بندوں کیلئے جو منصوبہ بندی کرتا ہے اس میں بندے کی ہی بھلائی ہوتی ہے۔

عبدالملک کا کہنا تھا کہ اداکار فیروز خان نے مجھے نوکری کی آفر کی اس حوالےسے میرا ان سے رابطہ بھی ہوچکا ہے، تاہم ان کے علاوہ کسی نے مجھے نوکری کی پیشکش نہیں کی کسی سیاستدان یا حکومت کے کسی نمائندے نے مجھ سے کوئی رابطہ بھی نہیں کیا ۔

عبدالمالک اپنے اس "محبت کے شربت ” میں معروف کمپنی کا دودھ، روح افزاء، چینی استعمال کرتے ہیں


Featured Content⭐


24 گھنٹوں کے دوران 🔥


From Our Blogs in last 24 hours 🔥


>