چین میں کرونا وائرس پاکستان سے بھیجے گئے گدھوں سے پھیلا ،بھارتی پنڈت کا دعویٰ

بھارت کی جانب سے ہمیشہ ہر آفت اور مصیبت کا پاکستان کو مورد الزام ٹھہرایا گیا ہے۔ حسب روایت اب کرونا وائرس کے پھیلاؤ کا ذمہ دار بھی پاکستان قرار پایا ہے۔

 

میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے بھارتی پنڈت کا گائے کے پیشاب سے کرونا وائرس کا علاج بتاتے ہوئے کہنا تھا کہ گائے کے پیشاب میں کرونا وائرس کے علاوہ ہر بیماری کا علاج چھپا ہوا ہے تاہم کسی کو بھی کرونا وائرس سے گھبرانے کی ضرورت نہیں بلکہ گائے کا پیشاب پینے کی ضرورت ہے۔

حسب روایت میڈیا سے گفتگو میں بھارتی پنڈت کی جانب سے پاکستان پر کرونا وائرس کے پھیلاؤ کا الزام لگاتے ہوئے کہنا تھا کہ پاکستان میں موجود ہر شخص، جانور کو کرونا وائرس ہے حتیٰ کہ پاکستان آرمی کے نوجوان بھی بری طرح سے کرونا وائرس کا شکار ہیں کیونکہ ہر وقت ان کی جانب سے بارڈر پر ہمارے فوجیوں پر گولیاں برسائی جاتی ہیں۔

بغض پاکستان کا شکار بھارتی پنڈت نے الزام لگاتے ہوئے حد یہ کی کہ چین میں پھیلے کرونا وائرس کا ذمہ دار پاکستان سے منگوائے گئے گدھوں کو ٹھہرا دیا اور کہا کہ چین میں کرونا وائرس کہیں اور سے نہیں بلکہ پاکستان سے منگوائے گئے گدھوں سے پھیلا کیونکہ چین کے لوگوں نے پاکستان سے منگوائے گئے گدھے کا گوشت کھایا جہاں سے اس وائرس کی ابتداء ہوئی۔

بعد ازاں میڈیا سے گفتگو میں بھارتی پنڈت نے تمام بھارتیوں سے گائے کا پیشاب خود پینے کے ساتھ ساتھ اپنے گھر والوں اور دوستوں کو بھی پلانے کی درخواست کرتے ہوئے کہا کہ گائے کا پیشاب پینے سے کرونا وائرس آپ سے کوسوں دور رہے گا۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >