شہزادہ ہیری نے چوری کی زمین پر 2 ارب کا گھر خرید لیا

شہزادہ ہیری اور ان کی اہلیہ میگھن مارکل نے کینیڈا میں نیا گھر خرید لیا جس کے بارے میں دعویٰ کیا جارہا ہے کہ وہ گھر برطانوی نوآبادیات کاروں کی چرائی ہوئی زمین پر بنا ہے۔

ٹوسوکی نامی قبیلے کا دعویٰ ہے کہ کینیڈا کا یہ علاقہ ان کے آباؤ اجداد کی ملکیت تھا،200 سال قبل انہوں نے برطانوی نوآبادیات کاروں سے ایک معاہدہ کیا تھا جس کے تحت یہ زمین چند سو ڈالرز کے بدلے انہیں دے دی گئی۔

Prince Harry Home

قبیلے کی سربراہ تانیہ جمی کہنا تھا کہ شہزادہ ہیری اور میگھن مارکل کو اس زمین کی تاریخ اور اہمیت سمجھنی چاہیئے، اس زمین کے نیچے ان کے آباؤ اجداد دفن ہیں۔

وینکوور نامی یہ جزیرہ سنہ 1849 سے 1866 کے درمیان برطانوی تسلط میں تھا۔ یہاں پر پہلی برطانوی آباد کاری سنہ 1843 میں کی گئی۔ برطانوی شاہی خاندان سے علیحدگی کے بعد شہزادہ ہیری نے یہیں پر اپنا عالیشان گھر خریدا ہے جس کی مالیت 1 کروڑ 70 لاکھ پاؤنڈز یعنی تقریبا 2 ارب 16 کروڑ پاکستانی روپے سے زائد ہے۔

تاحال یہ معلوم نہیں ہوسکا کہ اس مینشن کا مالک کون تھا اور شہزادے نے یہ گھر کس سے خریدا ہے۔

خیال رہے کہ شہزادہ ہیری اپنی اہلیہ میگھن اور بیٹے آرچی کے ساتھ جلد ہی کینیڈا میں ایک خود مختار اور آزاد زندگی کا آغاز کریں گے۔ میگھن اور آرچی کینیڈا پہنچ چکے ہیں ۔

واضح رہے کہ شہزادہ ہیری اور میگھن مارکل نے برطانوی شاہی خاندان سے علیحدگی اختیار کرلی تھی اور وہ شاہی پروٹوکول چھوڑ کر عام انسانوں کی طرح زندگی بسر کرنا چاہتے ہیں اور اب وہ مستقبل میں اپنے فلاحی و دیگر کاموں پر توجہ دیں گے۔کوئین الزبتھ نے دونوں کی علیحدگی کی منظوری دیدی تھی اور پرنس ہیری سے مراعات اور اعزازات واپس لے لئے گئے ہیں۔


24 گھنٹوں کے دوران 🔥

View More

From Our Blogs in last 24 hours 🔥

View More

This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept

>