مسلم و پاکستان مخالف تقاریر دہلی میں شکست کی وجہ بنیں:امیت شا کا اعتراف

عقل آ گئی یا اکڑ نکل گئی ۔کہتے ہیں کہ جب شکست کی چوٹ لگتی ہے تو بڑوں بڑوں کے حوش ٹھکانے آجاتے ہیں ایسے ہی مودی سرکار کے ہوم منسٹر امیت شاہ کی بھی ہوش ٹھکانے آ گئی ہے ہیں

تفصیلات کے مطابق دہلی الیکشن میں شکست فاش کے بعد ہر وقت مسلمانوں اور پاکستان مخالف بیانات دینے والے مودی سرکار کے ہوم منسٹر امیت شاہ کا کہنا ہے کہ ہمیں "گولی مارو” اور "پاک بھارت میچ” جیسے بیانات نہیں دینا چاہیے تھے اور ہماری پارٹی آج ایسے بیانات سے خود کو الگ کر رہی ہے

بھارت کے مرکزی وزیر داخلہ امیت شاہ نے بھارت کے نجی ٹی وی چینل ٹائمز ناؤ کے پروگرام میں
بات کرتے ہوئے کہا کہ حالیہ دہلی اسمبلی انتخابی مہم کے دوران بی جے پی رہنماؤں کو گولی مارو اور ‘ہند پاک میچ’ جیسی تقاریر نہیں کرنی چاہئیں تھیں اور ایسا ممکن ہے کہ اس طرح کی تقریروں کے نتیجے میں پارٹی کی شکست ہوئی ہو۔
مزید بات کرتے ہوئے انہوں نے مہاتما گاندھی کے پارلیمنٹ میں کیے وعدے بھی پڑھ کر سنائے جیسے کہ12 جولائی 1947 کو مہاتما گاندھی نے کہا تھا کہ جن لوگوں کو پاکستان سے بھگایا گیاا نہیں پتہ ہونا چاہیے تھا کے وہ بھارت کے شہری ہیں انہیں یہ محسوس کرنا چاہیے تھا کہ بھارت ہمیشہ ان کو قبول کرنے کا پابند ہے،اور واضح طور پر یہ بھی کہا کہ پاکستان سے مسلمان اور ہندو بھارت آ سکتےہیں اگر وہ بھارت میں رہنا چاہتےہیں تو بھارت سرکار انہیں شہریت اور نوکری دینے کی پابندی ہو گی۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >