کشمیر پر بات کرنے والی برطانوی رکن پارلیمنٹ کو بھارت میں داخلے کی اجازت نہ مل سکی

مودی سرکار نے سفارتی اصولوں کو بالائے طاق رکھتے ہوئے مسئلہ کشمیر پر بات کرنے والی برطانیہ کی رکن پارلیمنٹ کو بھارت میں داخلے کی اجازت دینے سے انکار کرتے ہوئے ایئر پورٹ سے واپس بھیج دیا

اطلاعات کے مطابق بھارت کی طرف سے کشمیر دشمنی کھل کر سامنے آنے لگی۔ ایسا ہی کچھ بھارت کے اندرا گاندھی ائرپورٹ پر دیکھنے میں آیا جہاں پر برطانیہ کی لیبر پارٹی کی رکن پارلیمنٹ ڈیبی ابراہمز کو نئی دہلی میں روک کر انکے ساتھ مجرموں جیسا برتاؤ کیا گیا اور واپس بھیج دیا گیا ۔

ڈیبی کے مطابق جب انہوں نے اسے روکے جانے کی وجہ جاننے کی کوشش کی کہ آخر انہیں ائر پورٹ پر ویزے کی معیاد ہونے کے باوجود کیوں روکا جارہا ہے تو انکے معلوم کرنے پر کسی نے انکو کچھ بھی بتانے سے گریز کرتے ہوئے بھارت سے جلا وطن کر دیا۔

یاد رہے کہ ڈیبی ابراہمز برطانوی پارلیمنٹ کی رکن ہونے کے ساھ ساتھ برطانوی پارلیمنٹ میں مقبوضہ کشمیر سے متعلق گروپ کی چیئرپرسن بھی ہیں۔ انکی طرف سے مودی حکومت پر کڑی تنقید کی جاتی رہی ہے اور بھارت کے مقبوضہ کشمیر میں غیرآئینی اقدامات اور غیر قانونی قبضے کو کشمیریوں کے ساتھ دھوکا قرار دیا ہے۔


  • 24 گھنٹوں کے دوران 🔥

    View More

    From Our Blogs in last 24 hours 🔥

    View More

    This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept

    >