دہلی فسادات: ہندو شخص نے جان پر کھیل کر اپنے مسلمان ہمسایوں کی جان بچالی (ویڈیو)

آگ اور خون کے ماحول میں رلادینے والی ویڈیو۔۔ ہندو نوجوان نے انتہاپسند ہندوؤں سے مسلمان شخص کی جان بچالی۔۔

تفصیلات کے مطابق دہلی میں جہاں انتہاپسند ہندو دنگا فساد کررہے ہیں۔ مسلمانوں کی جانیں لے رہے ہیں، مساجد شہید کررہے ہیں، لوگوں کی املاک اور دکانیں جلارہے ہیں وہیں ایک سنجیو نامی نوجوان نے اپنے مسلمان ہمسائے مجیب الرحمان کی جان بچالی۔

سنجیو کا کہنا تھا کہ انسانیت کے ناتے یہ اسکا فرض تھا۔ سنجیو نے اپنے مسلمان ہمسائے کی گھر کی ایک خاتون کو جو حاملہ تھی اسے بلوائیوں سے بچاتے ہوئے موٹرسائیکل پر بٹھاکر ڈسپنسری پہنچایا اور محفوظ جگہ پر پہنچایا۔

سنجیو نے بتایا کہ انتہاپسند ہندو اسکے مسلمان ہمسائے اور اسکی فیملی کو مارنے کیلئے آئے اور اسکے گھر کا دروازہ توڑرہے تھے ۔ انہوں نے اپنے ہندو ہمسائے کو فون کیا کہ ہماری جان خطرے میں ہے ، کیا ہم آپکے گھر پناہ لے لیں جس پر سنجیو نے کہا کہ یہ گھر آپکا ہے، پورا محلہ آپکا ہے ۔ جس کے بعد وہ انہیں اپنے گھر لے آئے۔

مسلمانوں کی املاک جلنے پر سنجیو کی آنکھوں میں آنسو آگئے اور اس نے کہا کہ پچھلے تین دن سے ایسا لگ رہا ہے جیسے میں دہشتگرد ہوں اور محلے دار مجھے دہشتگرد سمجھ رہے ہوں۔

اس موقع پر سنجیو نے اپنی بیٹی سے ملایا جس نے اس مسلمان فیملی کے جانے کے بعد کھانا نہیں کھایا۔ سنجیو کی بیٹی پریانکا اس موقع پر بے اختیار روپڑی اور کہا کہ جب میں چھوٹی سی تھی تو انہوں نے مجھے پالا تھا۔

سنجیو نے انکشاف کرتے ہوئے کہا کہ میں صبح 8 بجے دکان پر چلاجاتا تھا، میری بیٹی اسی مسلمان فیملی کے گھر رہتی تھی اور وہی انہیں کھلاتے پلاتے اور اسکا خیال رکھتے تھے۔

سجیو نے مزید بتایا کہ مجیب الرحمان کے بھائی کے بچے نہیں ہیں، انہوں نے میرے سب بچوں کو اپنی اولاد سمجھ کر پالا ہے۔

  • بہت ہی اچھا کام کیا اللہ اس کام کا بیتر صلہ دے مزید یہ کہ ہم مسلمانوں نے پاکستان میں کسی بھی ھندو کو ھاتھ تک نہی لگایا کہ یہں کےھندو ہمارے پاکستانی بھائ ہیں اور وہ بھی ہمارے ساتھ ساتھ پاکستان کی ترقی میں پیش پیش ہیں اور پاکستان ایک پر امن ملک بہت ہی اچھا کام کئا ہت سنجیو صاحب نے

  • اللہ تعالیٰ ان تمام ہندوؤں کو جنہوں نے مسلمانوں کی کسی بھی درجے میں مدد کی ہے، ہدایت عطا فرما کر ایمان کی دولت سے نوازے اور آخرت میں جنت میں داخل فرمائے۔ اصل کامیابی تو یہی ہے۔


  • 24 گھنٹوں کے دوران 🔥

    View More

    From Our Blogs in last 24 hours 🔥

    View More

    This website uses cookies to improve your experience. We'll assume you're ok with this, but you can opt-out if you wish. Accept

    >