ایرانی سپریم لیڈر کے مشیرمحمد میر محمدی کورونا وائرس کے باعث جاں بحق

ایران میں کورونا وائرس کے شکار جاری ہیں، ایرانی سپریم لیڈر آیت اللہ خمینی کے مشیر کورونا وائرس کے باعث جان کی بازی ہار بیٹھے، جبکہ متعدد اعلی حکومتی اراکین اس وائرس کا شکار ہیں۔

تفصیلات کے مطابق محمد میر محمدی ایکسپینڈیسی کونسل کے رکن تھے جو کہ آیت اللہ خمینی اور پارلیمنٹ کے درمیان تنازعات کو دور کرنے میں مدد کرتے تھے، 71 برس کی عمر میں پیر کے روز انتقال کرگئے، ایران کے نائب صدر اور ڈپٹی وزیرصحت بھی کورونا وائرس کا شکار ہیں۔
ایران میں کورونا وائرس کے شکار بڑھتے جارہے ہیں، ایران کے محکمہ صحت کے مطابق پچھلے 24 گھنٹے کے دوران کورونا وائرس کے 523 نئے کیسز سامنے آئے ہیں جس کے بعد ملک بھر میں کورونا کے شکار افراد کی تعداد1500 سے تجاوز کرگئی ہے۔
واضح ہو کہ یہ ہلاکت اس وقت ہوئی جب ایران نے کورونا وائرس سے بچاؤ کیلئے امریکہ کی مدد کی پیشکش کو مسترد کردیا تھا۔
امریکی سیکرٹری خارجہ مائیک پومپیو نے گزشتہ ہفتے اعلان کیا تھا کہ امریکہ ایران میں کورونا وائرس کے پھیلنے پر تشویش کا شکار ہے جس پر ترجمان ایرانی وزارت خارجہ عباس مساوی نے جواب دیتے ہوئے کہا کہ ہم زبانی کلامی مدد کی پیشکش کو منظور کرنےکیلئے تیار نہیں ہیں، جب ہمارا ملک امریکہ کی نیت سے متعلق ہمیشہ ہی مشکوک رہتا ہے اور اب بھی امریکی حکومت اس بحران سے نمٹنے کی ہماری ہمت کو کمزور کرنا چاہتی ہے۔
واضح ہو کہ ایران میں وائرس سے ہلاکتوں کی اوسط 5.5 فیصد ہے جس سےاندازہ لگایا جارہا ہے کہ ایران میں کورونا سے انفیکٹیڈ افراد کی تعداد کہیں ذیادہ ہوگی ، ایران میں اب تک 66 افراد اس وائرس کے باعث موت کے منہ میں جاچکے ہیں ، چائنا کے علاوہ یہ کسی ملک میں سب سے ذیادہ ہلاکتیں ہیں۔
ایران میں لوگوں میں کورونا وائرس کی موجودگی سے متعلق ٹیسٹس کا سلسلہ جاری ہے، تعلیمی ادارے بند کیے جاچکے ہیں، لیکن تمام مذہبی مقامات عوام کیلئے کھلے ہیں۔ گزشتہ ہفتے کچھ ایرانی افراد کو کورونا وائرس سے محفوظ رہنے کیلئے قبر کو چاٹنے کے جرم میں گرفتار بھی کیا گیا۔
پاکستان اور مشرق وسطی کے بیشتر ممالک نے ایران کے ساتھ سفر پابندیاں عائد کردی ہیں۔
پڑوسی ملک بھارت میں بھی کورونا وائرس کے 2 کیسز سامنے آچکے ہیں


Featured Content⭐


24 گھنٹوں کے دوران 🔥


From Our Blogs in last 24 hours 🔥


>