اقوام متحدہ کی ہائی کمشنر نے شہریت بل کے خلاف بھارتی سپریم کورٹ میں درخواست دائر کر دی

بھارت میں جاری مظاہروں کے پیش نظر اقوام متحدہ کی انسانی حقوق کی ہائی کمشنر مچل بچلیٹ نے متنازع شہریت بل کیخلاف بھارتی سپریم کورٹ میں درخواست دائر کردی۔

تفصیلات کے مطابق جنیوا میں بھارتی حکام کو اقوام متحدہ کی انسانی حقوق کے کمیشن کے دفتر کی جانب سے آگاہ کیا گیا ہے کہ انسانی حقوق کمیشن کی سربراہ مچل بچلیٹ نے بھارت میں نافذ کردہ متنازعہ شہریت بل کے خلاف بھارتی سپریم کورٹ سے رجوع کرنے کا فیصلہ کیا ہے جبکہ انسانی حقوق کے کمیشن کی سربراہ کی جانب سے بھارتی سپریم کورٹ میں اس حوالے سے درخواست دائر کردی گئی ہے۔

بعد ازاں بھارتی وزیر خارجہ کے دفتر کی جانب سے جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ متنازع شہریت کے بل کا نفاذ ہمارا اندرونی معاملہ ہے جس پر کسی غیر ملکی ادارے یا سربراہ کو اعتراض کرنے یا اس کے خلاف درخواست دائر کرنے کا کوئی قانونی اور آئینی حق حاصل نہیں ہے۔ جبکہ بھارتی حکومت اپنے اور اپنی عوام کے مفاد میں ہر فیصلہ کرنے کے لیے مکمل آزاد ہے۔

واضح رہے کہ جنیوا میں ہونے والے انسانی حقوق کمیشن کے 43 اجلاس میں مچل بچلیٹ نے سربراہی کرتے ہوئے اپنے خطاب میں بھارت میں نافذ متنازع شہریت بل کے خلاف کھل کر اپنے تحفظات کا اظہار کیا تھا جبکہ دوسری جانب اقوام متحدہ کے جنرل سیکرٹری اینٹونیو گوٹرس بھی متنازع شہریت بل پر تحفظات کا اظہار کرتے ہوئے بھارتی مسلمانوں کے ریاست سے بے دخل ہونے کے خدشے کا بھی اظہار کر چکے ہیں۔


Featured Content⭐


24 گھنٹوں کے دوران 🔥


From Our Blogs in last 24 hours 🔥


>