بھوکے مرنے سے بہتر ہے ہم بیماری سے مر جائیں ، بھارتی مزدوروں کی دہائی

کرونا سے بچ گئے تو بھوک سے مر جایئں گے، بھارتی مزدوروں کی دہائی ، کرفیو کی وجہ سے ہزاروں مزدوروں نے کام نہ ملنے کی وجہ سے آبائی علاقوں کا رخ کر لیا

تفصیلات کے مطابق کرونا وائرس سے نمٹنے کیلئے بھارتی حکومت کی شدید غفلت سامنے آگئی۔

بھارت میں مودی سرکار نے عوام۔ کو پیشگی بتائے اچانک سے ملک بھر میں کرفیو نافذ کر دیا اور بنیادی ضرورت کی اشیا کے لئے بھی کوئی سسٹم نہ بنایا۔اس کرفیو اور جلد بازی کا نتیجہ یہ نکلا کہ اب دیہاڑی دار مزدور کام اور حکومت کی طرف سے امداد نہ ملنے کی وجہ سے بھوک سے تنگ آکر اپنے آبائی علاقوں کا رخ کرنے لگے ہیں۔

ممبئی سے جانے والی ہائی وے پر دیکھا جا سکتا ہے کہ ہزاروں مزدور اپبے بیوی بچوں سمیت سر پر سامان اٹھائے آبائی علاقوں کا رخ کئے ہوئے ہیں۔

ایک مزدور نے میڈیا سے بات کرتے ہوئے بتایا کہ اسکے مالک مکان نے ان سے مکان خالی کروا لیا ہے، اسکا کہنا ہے کہ بیماری پھوٹ پڑی ہے آپ گھر خالی کر دیں حالات ٹھیک ہوبے پر دیکھی جائے گی۔ انکا کہنا تھا کہ انہوں نے بسکٹ وغیرہ کھا کرکچھ دن گزارہ کیا لیکن اب مشکل ہے۔

دیہاڑی داروں کی مشکل یہیں حل نہیں ہوئی بلکہ باہر نکلتے ہی انہیں ایک اور مشکل کا سامنا ہے، بھارتی پولیس گھروں کو واپس جانے والے مزدوروں کو سڑکوں پر کان پکڑوا دیتی ہے یا انہیں دوسرے حیلوں سے تنگ کیا جاتا ہے۔

یاد رہے کہ کرونا کے پیش نظر بھارت میں 21 دن کے لئے کرفیو نافذ ہے۔

OR comment as anonymous below

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے


24 گھنٹوں کے دوران 🔥

View More

From Our Blogs in last 24 hours 🔥

View More