نئی تیار شدہ کورونا ویکسین کی چینی فوج میں استعمال کی منظوری

جب سے کورونا کی وبا پھیلی ہے تب سے ہی اس سے چھٹکارا پانے کے لیے ویکسین کی تیاری کے لیے کوششیں کی جار ہی ہیں اور ایسی بہت ہی کم ویکسینز سامنے آئی ہیں جن کو انسانی آزمائش کے مرحلے میں داخل کیا گیا ہو۔

ان ابتدائی ویکسینز میں سے ایک چین میں تیار ہورہی ہے چینی کمپنی کین سینو بائیو لوجک اس ویکسین کو چینی فوج کے تحقیقی یونٹ اکیڈمی آف ملٹری سائنس (اے ایم ایس) کے ساتھ مل کر تیار کررہی ہے۔ مئی میں اس کے انسانی آزمائش کے ابتدائی نتائج جاری کیے گئے تھے جو حوصلہ افزا قرار دیئے گئے۔

کلینیکل ٹرائلز میں اس کے محفوظ اور کسی حد تک موثر ثابت ہونے پر اب چین کی فوج نے اپنے اہلکاروں کے لیے اس ویکسین کے استعمال کی منظوری دے دی ہے۔ ایڈ 5 این کوو نامی ویکسین چین کی 8 ویکسینز میں سے ایک ہے جو انسانی آزمائش کے مرحلے سے گزر رہی ہیں، جبکہ اسے کینیڈا میں بھی انسانی آزمائش کی اجازت مل چکی ہے۔

کمپنی کی جانب سے کہا گیا ہے کہ یہ ویکسین فی الحال صرف فوجی استعمال کے لیے محدود ہوگی اور لاجسٹک سپورٹ ڈپارٹمنٹ کی منظوری تک بڑے پیمانے پر اس کا استعمال نہیں کیا جائے گا۔ مگر ابھی تک یہ نہیں بتایا گیا کہ چینی فوجیوں کے لیے اس ویکسین کا استعمال لازمی ہوگا یا ان کی مرضی پر ہوگا۔

کین سینو کی ویکسین کے انسانی آزمائش کے پہلے اور دوسرے مرحلے میں دریافت کیا گیا تھا کہ یہ کورونا وائرس سے ہونے والی بیماریوں کی روک تھام میں مددگار ہے، تاہم کمپنی کا کہنا تھا کہ کمرشل کامیابی کی ابھی کوئی ضمانت نہیں۔

OR comment as anonymous below

آپ کا ای میل ایڈریس شائع نہیں کیا جائے گا۔ ضروری خانوں کو * سے نشان زد کیا گیا ہے


24 گھنٹوں کے دوران 🔥

View More

From Our Blogs in last 24 hours 🔥

View More