بھارتی میڈیا اپنے میزائلوں میں پاکستانی میزائل دکھا کر بھارتی عوام کو اُلو بنانے لگا

بھارتی میڈیا کی نااہلی کا ایک اور کارنامہ، ہدف کو نشانہ بنانے والے میزائلوں میں پاکستانی میزائل دکھا کر بھارتی عوام کو اُلو بنانے لگے

لداخ میں بھارت اور چین کے درمیان جاری تناؤ کی صورتحال پر بھارتی فوج کچھ کرنے کی اہل نہیں اس لیے اب بھارتی میڈیا نے خود ہی جنگ لڑنے کا فیصلہ کر لیا ہے۔

ایک طرف تو بھارتی میڈیا پر چین کے خلاف دل کھول کر پراپیگنڈا کیا جا رہا ہے، جس میں چینی صدر شی جن پنگ کو بھی کورونا جن پنگ تک کہا جا رہا ہے اور چین کے نام کے ساتھ پاپی جیسے گھٹیا الفاظ کا استعمال کیا جا رہا ہے۔

اب لداخ کی وادی گلوان میں چین کے ہاتھوں عزت لٹوانے اور دنیا کے سامنے بھارتی فوج کی رسوائی کے بعد بھارتی میڈیا نے اس لڑائی میں حصہ لے لیا ہے اور ناکام بھارتی حکومت اور ناکام بھارتی فوج کا آلہ کار بننے کی ٹھان لی ہے۔

انڈین میڈیا کے مطابق بھارتی فوج ایل اے سی پر جنگی مشقیں کر رہی ہے جس سے پریشان ہو کر چین اجلاس پر اجلاس بلا رہا ہے جبکہ حقیقت تو یہ ہے کہ وادی گلوان میں چین نے بھارتی فوجیوں کو مار مار کر ان کا ستیاناس کر دیا تھا اور اس تشدد سے20 بھارتی فوجی ہلاک بھی ہو گئے تھے۔

بھارتی میڈیا ہاؤس ریپبلک ٹی وی نیٹ ورک کے مطابق چین اپنی فوج کو کسی ایک جگہ اکٹھا نہیں ہونے دے رہا کیونکہ ڈر ہے کہ اگر چینی فوج کسی ایک مقام پر اکٹھی ہوئی تو کہیں بھارت حملہ ہی نہ کر دے۔

بھارتی میڈیا کے اس وہم پر صرف ہنسا ہی جا سکتا ہے کیونکہ چینی فوج کے ہاتھوں بھارتی فوج کو جس ہزیمت کا سامنا کرنا پڑا ہے وہ دنیا کے سامنے ہے۔چینی فوج نے پینگونگ جھیل پر موجود آٹھ چوٹیوں میں سے 4 پر قبضہ کر لیا اور جس پر چینی فوج کا دعویٰ ہے کہ یہ چاروں چوٹیوں کا علاقہ چین کے حصے میں آتا ہے۔

دوسری جانب بھارتی میڈیا نے اپنے عوام کو بتایا ہے کہ بھارت لداخ کے علاقے میں جنگی مشقیں کر رہا ہے اور ان جنگی مشقوں سے گھبرا کر چین اجلاس پر اجلاس بلا رہا ہے اور چینی صدر پریشان ہیں کہ آخر انہوں نے لداخ میں گھس کر کہیں کوئی غلطی تو نہیں کی۔

جب کہ غیر ملکی اور غیر جانبدار مبصرین کے مطابق چین کو بھارتی فوج کی ٹھکائی کے لیے کسی کی مدد کی ضرورت نہیں کیونکہ چین ٹیکنالوجی اور فوجی طاقت میں بھارت سے کہیں آگے ہے۔

اس بھارتی فیک پراپیگنڈا وار فیئر میں بھارتی چینل انڈیا ٹوڈے نے بھولی بھارتی عوام کو پاگل بنانے کے لیے جنگی مشقوں کا حوالہ دے کر میزائل حملے دکھائے گئے جن میں میزائل اپنے مقرر کردہ ہدف کو کامیابی سے نشانہ بناتے ہیں۔ مگر حقیقت تو یہ ہے کہ یہ میزائل پاکستانی نصر ہے جو کہ زمین سے زمین تک 60 کلومیٹر تک اپنے ہدف کو جوہری طاقت کے ساتھ کامیابی سے نشانہ بنا سکتا ہے۔

اس کلپ میں انڈیا ٹوڈے دعویٰ کرتا ہے کہ اگر چین نے بھارت سے ٹکر لی تو اس کا انجام کیا ہو گا میزائل کی اس فوٹیج سے اس بات کا اندازہ لگایا جا سکتا ہے۔ جبکہ اس ویڈیو کلپ میں جو میزائل دکھایا گیا ہے وہ پاکستان کا نصر میزائل ہے جو اپنے ہدف کی کامیابی کے ساتھ دھجیاں اڑانے کی صلاحیت رکھتا ہے۔

اب بھارتی میڈیا کے اس بے وقوفی کے بعد پاکستان میں بھی اس حرکت کا خوب مذاق بنایا جارہا ہے جس پر پاکستان کے معروف صحافی مخدوم شہاب الدین کہتے ہیں کہ ہمارے پاکستانی میزائل نصر کو دکھا کر بھارتی میڈیا چین اور پاکستان دونوں کو دھمکانے کی کوشش کر رہا ہے۔

  • Kuan Kay Indian’s ka Missile Ajay Day Gund, kisi Gund kay dher per hi gera ta hai… Salay Movie Bana Bana ker logon ko bewakoof bana rehay hain… TIK TOK BUND KER DI MAGER UCHUL KUD BUND NAHIN KI…. BEGHARAT


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >