اسرائیل:اقوام متحدہ کی گاڑی میں غیر اخلاقی حرکات کرنیوالے اہلکار معطل

 

اسرائیل:اقوام متحدہ کی گاڑی میں غیر اخلاقی حرکات کرنیوالے اہلکار معطل

اسرائیل کے شہر تل ابیب میں ساحل کے قریبی علاقے میں فلمائی گئی 18 سیکنڈ کی ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہوئی جس میں اقوام متحدہ کی گاڑی میں2 لوگوں کو سر عام غیر اخلاقی حرکات کرتے ہوئے دیکھا جا سکتا تھا۔

اس ویڈیو کلپ میں سرخ لباس میں ملبوس شخص کو واضح طور پر دیکھا جا سکتا تھا۔ ویڈیو کلپ سامنے آنے کے بعد اقوام متحدہ نے اس معاملے کی تحقیقات کا وعدہ کیا تھا۔

 

اقوامِ متحدہ کے سیکریٹری جنرل کے ترجمان سٹیفان ڈوجاریک کا کہنا تھا کہ وہ اسرائیل میں اپنے ادارے کی ایک گاڑی میں مبینہ غیر اخلاقی حرکات کی ویڈیو پر صدمے کا شکار ہیں۔

ابتدائی تحقیقات کے بعد اب اقوام متحدہ کا کہنا ہے کہ ویڈیو میں نظر آنے والے دونوں مردوں کی شناخت ہو گئی ہے اور وہ اقوام متحدہ کے ’نیشنز ٹروس سپرویژن آرگنائزیشن‘ کے اہلکار ہیں۔

اقوام متحدہ نے دونوں اہلکاروں کو ادارے کی سرکاری گاڑی میں جنسی عمل کی ویڈیو سامنے آنے کے الزامات کے پیش نظر بغیر تنخواہ چھٹی پر بھیج دیا ہے۔ اقوام متحدہ کا کہنا ہے کہ اس واقعہ کی تحقیقات کا نتیجہ آنے تک عملے کے یہ دونوں اہلکار بغیر تنخواہ نوکری سے معطل رہیں گے۔

ترجمان نے اس ویڈیو میں نظر آنے والے رویے کو قابلِ نفرت قرار دیا ہے۔ اس ویڈیو کے منظر عام پر آنے کے بعد گذشتہ جمعے کو ترجمان نے کہا کہ ایسا رویہ ہر اس چیز کے خلاف ہے جو ہم اقوامِ متحدہ کے عملے کے غلط رویوں کو روکنے کے لیے کر رہے ہیں۔

اقوامِ متحدہ کی جنسی مِس کنڈکٹ کے خلاف پالیسیاں سخت ہیں۔ اگر ادارے کے کسی اہلکار کو ان ضوابط کی خلاف ورزی کا مرتکب پایا جائے تو اسے انضباطی کارروائی کا سامنا کرنا پڑ سکتا ہے، ملک سے نکالا جا سکتا ہے اور اُن کی اقوامِ متحدہ کے امن مشنز میں شمولیت پر پابندی عائد کی جا سکتی ہے۔

تاہم یہ ان کے اپنے ملک کی ذمہ داری ہے کہ وہ ان کے خلاف مزید انضباطی یا قانونی کارروائی کریں۔

سیکریٹری جنرل یو این انتونیو گتریس نے اقوامِ متحدہ میں جنسی مِس کنڈکٹ کی خلاف ورزی پر ‘عدم برداشت’ کی پالیسی کا وعدہ کیا ہے۔ انہوں نے کہا تھا کہ اس معاملے میں تفتیش آگے بڑھ رہی ہے۔

یاد رہے کہ 2019 میں اقوام متحدہ کے سٹاف پر جنسی استحصال اور بدسلوکی پر مبنی کل 175 الزامات لگے تھے۔ ان الزامات میں سے 16 کو ناقابل ضمانت قرار دیا گیا جبکہ 15 ناقابل سماعت تھے اور دیگر کے بارے میں فی الحال تفتیش جاری ہے۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >