سابق ملائیشین وزیراعظم نجیب رزاق کی اماراتی ولی عہد سے ٹیلی فونک گفتگو لیک

ملائیشیا کے سابق وزیراعظم نجیب رزاق کی اماراتی ولی عہد محمد بن زید النہیان سے ٹیلی فونک گفتگو سامنے آ گئی

ملائیشیا کے سابق وزیراعظم نجیب رزاق کو ملٹی بلین ڈالرز سکینڈل میں7 سنگین الزامات میں قصور وار پایا گیا ہے جس کے تحت ان کو 12 سال کی قید کی سزا سنا دی گئی ہے۔

الزام ہے کہ اس سکینڈل میں نجیب رزاق نے ملکی ترقی کے لیے مختص فنڈز میں خرد برد کی اور ملکی خزانے کو اربوں ڈالرز کا نقصان پہنچایا۔ اس سکینڈل نے ملائیشین سیاست کو ہلا کر رکھ دیا اور نتیجتاً 61 سال اقتدار میں رہنے والی امنو پارٹی کا اقتدار ختم ہو گیا اور اس فراڈ کے نیتجے میں دنیا بھر کے کئی ممالک میں تحقیقات شروع ہو گئیں ہیں۔

ملائیشین سپریم کورٹ نے 16ماہ جاری رہنے والے اس ٹرائل کے نتیجے میں نجیب رزاق کو مجرم ٹھہرا کر 12 سال قید اور 39 ملین پاؤنڈ جرمانہ عائد کیا ہے۔

اس کیس کے دوران نجیب رزاق کی ابوظہبی کے ولی عہد محمد بن زید النہیان سے ٹیلی فونک گفتگو سامنے آئی جس میں وہ اماراتی ولی عہد سے اپنے بیٹے رضا کی مدد کے لیے کروڑوں ڈالرز کی ٹرانزیکشن کرنے کی درخواست کرتے ہیں۔ یہ آڈیو کال ملائیشین انسداد بدعنوانی سیل کی جانب سے جاری کی گئی۔

Leaked call between Najib Razak and MbZ

Malaysia's former leader Najib Razak has been found guilty of misusing millions in public funds in a case linked to the infamous 1MDB scandal. Early this year, leaked calls reveal he once asked Abu Dhabi's crown prince to help him and his son escape prosecution.

Posted by Middle East Eye on Tuesday, July 28, 2020

اس فون کال کے دوران نجیب رزاق ابوظہبی کے ولی عہد محمد بن زید سے ذاتی حیثیت میں مدد طلب کرتے ہیں جبکہ محمد بن زید النہیان ان سے خاندان سے متعلق پوچھتے ہیں جس پر نجیب رزاق کہتے ہیں کہ باقی تو سب ٹھیک ہے مگر یہ سکینڈل ان کی ساکھ خراب کر رہا ہے۔

نجیب رزاق کرپشن اور چوری کے42 مقدمات میں ملوث پائے گئے ہیں جن میں4 بلین ڈالرز کی چوری کی گئی ہے۔ جو کہ ملائیشیا کے سرکاری خزانے سے چوری کیے گئے۔

ملائیشین ڈویلپمنٹ برہد ون نامی سکینڈل میں نجیب رزاق کے سوتیلے بیٹے رضا عزیز کی پروڈکشن کمپنی(ریڈ گرینائٹ پکچرز) کے ذریعے کروڑوں روپے ملک سے باہر منی لانڈرنگ کے ذریعے بھیجے جانے کا الزام ہے۔

اس فون کال کے دوران نجیب رزاق محمد بن زید سے جھوٹی ادائیگیوں کی ٹرانزیکشن کے لیے کہتے ہیں اور ابوظہبی کی پٹرولیم کمپنی کے اکاؤنٹ سے ٹرانزیکشن کا مشورہ دیتے ہیں۔

  • کہیں تو فون کالز ہی ثبوت کے طور پر کافی ہیں۔ اور کہیں فیک بنک اکاونٹ، جعلی ڈِیڈ، ٹی ٹی، پاپڑ والوں کے اکاونٹ، گولے گنڈے والوں کے اکاونٹ، جعلی میڈیکل رپورٹس بھی ثبوتوں کے طور پر کافی نہیں۔۔
    اے اللہ ہم تیری ہی عبادت کرتے ہیں تجھ ہی سے مدد مانگتے ہیں۔۔ اے اللہ پاکستان کے سبھی کرپٹ حکمرانوں کو عبرت کا نشان بنا۔۔ پاکستان پر ایسے حکمران مسلط مت کر جو پاکستان اور پاکستانی قوم کے ساتھ مخلص نہیں۔۔ اے اللہ پاکستان سے جہالت کا خاتمہ کر دے اور جو ہمارے بہن بھائی بھٹکے ہوئے ہیں اور ہم سب کو سیدھا رستہ دیکھا۔۔اے اللہ آج کے دن ہماری نیک دعائیں قبول فرما۔۔ آمین۔۔ثمہ آمین۔۔

  • They could convict Razak because there is no establishment in Malaysia like in Pakistan. Here in Pakistan, we have got clearer evidence against families and individuals related to Nawaz, Shahbaz, Zardari, and many more but the establishment does not want these people to be punished. They’ll rather use these cases to blackmail these thugs and to use their loyalties as needed in maneuvering the politics.


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >