ڈونلڈ ٹرمپ نے بیروت میں ہونے والے دھماکوں کو حملہ قرار دے دیا

 

غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے بیروت دھماکوں کی شدید مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ میں نے اپنے ماہر امریکی جرنیلوں سے بات کی ہے یہ دھماکوں سے کہیں زیادہ حملہ لگتا ہے۔ امریکی صدر نے کہا کہ امریکا لبنان کی ہر ممکن مدد کرنے کے لیے تیار ہے۔

یاد رہے کہ لبنان کے درالحکومت بیروت میں گزشتہ رات زور دار دھماکے ہوئے ہیں۔ ابتدائی اطلاعات کے مطابق دھماکوں کے نتیجے میں کم از کم100 افراد ہلاک جبکہ 4 ہزار افراد زخمی ہوئے ہیں اور ابھی متعدد افراد کے ملبے تلے دبے ہونے کی اطلاعات ہیں۔

لبنان کے مقامی ذرائع ابلاغ نے بتایا ہے کہ دو دھماکے ہوئے ہیں جن کے نتیجے میں متعدد گھروں، دفاتر اور دکانوں کو شدید نقصان پہنچا ہے جبکہ درجنوں گاڑیاں بھی تباہ ہو گئی ہیں۔

ان دھماکوں کی آوازیں 8 کلو میٹر دور تک سنی گئیں۔ ابتدائی اطلاعات کے مطابق دھماکوں کے نتیجے میں بندرگاہ کا علاقہ بری طرح متاثر ہوا ہے۔ لبنانی وزیراعظم حسان دیاب کا کہنا ہے کہ تباہی کے ذمہ داروں کو قیمت چکانا ہوگی، حملے کے ذمہ داروں کے خلاف کارروائی کی جائے گی۔

لبنانی وزیر صحت حماد حسن کا کہنا ہے کہ دھماکوں سے بڑی تعداد میں شہری زخمی ہوئے ہیں اورنقصان بھی غیر معمولی ہوا ہے۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >