کرونا کے باعث عالمی معیشت کو 5800 ارب ڈالر نقصان کا خدشہ

کرونا کے باعث عالمی معیشت کو 5800 ارب ڈالر نقصان کا خدشہ

پاکستان سمیت دنیا بھر میں ویسے تو کرونا کیسزمیں کہیں کمی اور کہیں اضافہ دیکھنے میں آرہاہے لیکن اس وائرس کے باعث ملکی اور عالمی معیشت کا پہیہ جام رہا ہے، کرونا کی وجہ سے عالمی معیشت کو 5800 ارب ڈالر نقصان کا خدشہ ہے، ایشیائی ترقیاتی بینک کا کہنا ہے کہ 3 ماہ میں عالمی سطح پر معیشت کومجموعی طور پر 5800 ارب ڈالر کے نقصان کا خدشہ ہے،کرونا وبا سے ممکنہ معاشی نقصان پر اے ڈی بی کی رپورٹ جاری کردی گئی ہے۔

رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ کرونا وائرس کے باعث  تین ماہ میں 5 ہزار 800 ارب ڈالر کے نقصان کا اندیشہ ہے،اور اگر ایسی صورتحال چھ ماہ تک رہی تو نقصانات 8 ہزار 800 ارب ڈالر تک پہنچ سکتے ہیں، جس کے باعث عالمی سطح پر معاشی ترقی کی شرح 9.7 فیصد تک متاثر ہوسکتی ہے۔

رپورٹ کے مطابق عالمی معاشی سرگرمیاں متاثر ہونے میں ایشیا کا حصہ 30  فیصد ہوگا، اے ڈی بی کے مطابق عالمی سطح پر پیداوار 1700 ارب ڈالر سے 2500  ارب ڈالر تک متاثرہوسکتی ہے،عالمی سطح پر 15 سے 24  کروڑ افراد بے روزگار ہوسکتے ہیں جبکہ صرف ایشیا میں 10 سے 16 کروڑ افراد بے روزگار ہو سکتے ہیں۔

رپورٹ میں کہا گیا کہ اگر حالات یہی رہے تو چھ ماہ میں 5 کروڑ سے زائد افراد غربت کی لکیر سے نیچے چلے جائیں گے،ان حالات میں عام آدمی اور صنعتکاروں کو حکومت کی مدد کی اشد ضرورت ہو گی۔

ملک بھر میں کرونا وائرس سے چوبیس گھنٹے میں چھ سو پچہتر کیسز رپورٹ ہوئےمتاثرین کی تعداد دو لاکھ اکیاسی ہزار ایک سو چھتیس ہوگئی،وائرس سے مزید پندرہ افراد چل بسے، ملک میں اموات چھ ہزار چودہ ہوگئی ہیں، نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سینٹر نے اعداد و شمار جاری کردیے، دوسری جانب دنیا بھر میں کرونا  وائرس سے704,365 افراد  ہلاک  اور 18,702,737افراد متاثر ہیں۔ اب تک 11,917,247افراد صحتیاب ہوچکے ہیں۔


Featured Content⭐


24 گھنٹوں کے دوران 🔥


From Our Blogs in last 24 hours 🔥


>