مقبوضہ کشمیر کے لیفٹیننٹ گورنر کے استعفے نے بھارتی ایوانوں میں ہلچل مچادی

مقبوضہ کشمیر کے لیفٹیننٹ گورنر کے استعفے نے بھارتی ایوانوں میں ہلچل مچادی۔۔

مقبوضہ کشمیر کے گورنر گریش چندر مرمو نے استعفیٰ ایسے موقع پر دیا جب مقبوضہ کشمیر میں بھارتی غیرقانونی اور غاصبانہ قبضہ کو ایک سال مکمل ہوچکا تھا اور اس دن کو کشمیری یوم سیاہ کے طور پر منارہے تھے۔

بھارتی حکومت کو اس قسم کے سرپرائز کی توقع نہیں تھی لیکن اس سرپرائز نے نہ صرف بھارتی ایوانوں میں ہلچل مچادی بلکہ مودی سرکار کو نہ صرف اندرونی بلکہ بیرونی محاذ پر بھی سبکی کا سامنا کرنا پڑا۔

ذرائع کے مطابق گورنر گریش چندر مرمو کیلئے طویل لاک ڈاؤن کی وجہ سے مقبوضہ کشمیر کے معاملات چلانا مشکل ہوگیا تھا اور دوسری طرف مقبوضہ کشمیر میں نوکر شاہی میں دو مضبوط گروہوں میں تقسیم تھی جس کی وجہ سے انہیں اصل تنازع کا پتہ نہ چل سکا۔

دوسری جانب مودی سرکار بھی مقبوضہ کشمیر میں مسلسل لاک ڈاؤن کیلئے بضد تھی جس کی وجہ سے مقبوضہ کشمیر کے رہائشیوں کے کاروبار تباہ ہوکر رہ گئے، ہزاروں کی تعداد میں نوجوان بے روزگار ہوگئے۔

گریش چندر مرمو نے عوامی بھلائی کے کئی اچھے فیصلے کے اہم اعلانات کرنے کے بعد مودی سرکاری کے دباو پر مجبورا واپس لینا پڑے۔گریش چندر مرمو نے کئی بار مقبوضہ کشمیر میں انسانی حقوق کی پامالی، مسلسل کرفیو اور لاک ڈاؤن کے حوالے سے کشمیری عوام کی مشکلات سے بھارتی حکومت کو آگاہ کیا تھا۔ جس پر بھارتی حکومت نے کوئی ایکشن نہیں لیا۔

  • not all hindus are evil
    thats just the nature of any society.
    unfortunately, right now extremists have taken over and majority hindus who are against this henius crime can’t do much


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >