بنگلورمیں فسادات کے دوران مسلم نوجوانوں نے مندرکو بچانے کیلئے انسانی چین بنالی

بھارت کی ریاست بنگلور میں کانگریس رہنما کے رشتے دار کی فیس بک پر گستاخانہ پوسٹ کے خلاف پولیس کے ایکشن نہ لینے پر مظاہروں کا سلسلہ جاری ہے۔ مظاہرین نے پولیس سٹیشن کا گھیراؤ کرتے ہوئے پولیس سٹیشن کے باہر کھڑی گاڑیوں اور موٹر سائیکلوں کو آگ لگا دی۔

بنگلور پولیس نے کانگریس رہنما کے رشتے دار کے خلاف ایکشن لینے کی بجائے پولیس سٹیشن کے باہر جمع مشتعل مظاہرین کو منتشر کرنے کے لیے ان پر سیدھے فائر کھول دیے، پولیس کی مظاہرین پر فائرنگ کے نتیجے میں تین افراد جاں بحق ہوگئے۔

بنگلور میں تشدد کی تصاویر اور ویڈیوز میں سماجی اتحاد کی ایک منفرد ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہوئی۔ ویڈیو میں دیکھا جاسکتا ہے کہ مسلمان نوجوانوں نے ایک مندر کو بچانے کے لئے انسانی زنجیر بنائی اور شرپسندوں کو وہاں پاس آنے سے روک دیا۔ سوشل میڈیا پر ان لوگوں کی خوب تعریف ہو رہی ہے۔

اس ویڈیو اور پورے واقعہ پر کانگریس لیڈر اور رکن پارلیمنٹ ششی تھرور نے کہا ہے کہ جو لوگ قصوروار ہیں انہیں بخشا نہ جائے لیکن بنگلورو میں کچھ ایسا بھی ہوا ہے جسے دیکھا جانا چاہئے۔

ششی تھرور نے لکھا کہ جن لوگوں نے اکسایا انہیں گرفتار کیا جانا چاہئے اور سزا ملے۔ لیکن پوری برادری ایک طرح کی نہیں ہے۔ جیسے سبھی ٹھگ ہندو مذہب کی نمائندگی نہیں کرتے ہیں۔ بنگلور میں یہ بھی ہوا۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >