امریکی صدر بدمعاش، نسل پرست اور بہت بڑے فراڈ ہیں، ٹرمپ کے وکیل کا دعویٰ

امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی شہر ت ویسے تو صدر بننے سے پہلے کی ہی اچھی نہیں ہے مگر اس بار تو ان کے سابقہ ذاتی وکیل نے ہی ان پر قدرے  سنگین نوعیت کے الزامات لگادیئے۔

ماضی میں ڈونلڈ ٹرمپ کے وکیل رہنے والے مائیکل کوہن نے اپنی کتاب” ڈس لائل” (یعنی بے وفا )کے چند چھوٹے چھوٹے اقتباسات سوشل میڈیا پر شیئر کیے، ان میں مائیکل کوہن نے ڈونلڈ ٹرمپ پر 2016 کے صدارتی انتخابات میں دھوکے سے فتح حاصل کرنے کا الزام بھی لگایا۔

مائیکل کوہن نے دعویٰ کیا کہ  ان کے خاندان کے علاوہ میں وہ واحد شخص ہوں جو ٹرمپ کو اتنی نزدیکی سے جانتا ہوں، اور کچھ معاملات میں تو ان کی بیوی اور بچے بھی اتنا نہیں جانتے جتنا میں جانتا ہوں، میں نے انہیں انتہائی نجی محفلوں اور ایسے کلبوں میں دیکھا ہے جہاں غیر اخلاقی سرگرمیاں معمول کی بات ہے، ایسی جگہوں پر ڈونلڈ ٹرمپ کی شراب نوشی میں مدہوش اپنے حواس کھو دینے کے لمحات میں بھی میں ان کے ساتھ تھا اور ایسے وقت میں ٹرمپ نے اپنی زندگی کے سبھی پہلو میرے سامنے آشکار کیے ہیں۔

سوشل میڈیا پر اس کتاب کے چھوٹے چھوٹے ٹکڑوں میں مزید کہا گیا ہے کہ مائیکل کوہن بحیثیت ڈونلڈ ٹرمپ کے ذاتی وکیل ان کی بہت سی مشکوک ملاقاتوں کے بھی گواہ ہیں، اور چند جنسی افعال کی بھی تفصیل اس کتاب کا حصہ ہے۔

کتاب میں 2016 کے صدارتی انتخابات پر شکوک و شبہات کو مزید تقویت دیتے ہوئے لکھا گیا ہے کہ ٹرمپ صدارتی الیکشن جیتنے کیلئے کسی حد تک جانے کیلئے بھی تیار تھے۔

انہوں نے اس کیلئے روس کی مدد لی، انتخابی مہم کے دوران بھی ٹرمپ کا روسی دارالحکومت ماسکو میں پراپرٹی کا کاروبار جاری تھا، مائیکل کوہن نے دعویٰ کیا کہ ٹرمپ نے روسی صدر پیوٹن کے قریب ہونے کی بھی کوشش کی یہ تمام معاہدے چونکہ میرے اپنے ہاتھ سے طے پائے ہیں اس لیے تمام تر تفصیلات میرے علم میں ہیں۔

مائیکل کوہن کی یہ کتاب ابھی تک مارکیٹ میں فروخت کیلئے پیش نہیں کی گئی، مگر اس میں جس سنگین نوعیت کے پیشہ وارانہ اور نجی سطح کے الزامات ٹرمپ پر لگائے گئے ہیں اس کے منظر عام پر آنے کے بعد ڈونلڈ ٹرمپ کیلئے اپنا دفاع مزید مشکل ہوجائے گا۔

دوسری طرف اگراس کتاب کو صدارتی انتخابات سے کچھ عرصہ پہلے لیک اور انتخابات سے کچھ عرصہ پہلے پیش کیا گیا تو یہ انتخابی چال اور پراپیگنڈہ بھی سمجھا جاسکتا ہے۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >