قدرت کا معجزہ، 15 سال تک کومہ میں رہنے والا سعودی شہزادہ ہوش میں آنے لگا

عالمی خبر رساں ادارے کی رپورٹ کے مطابق سعودی شہزادے خالد بن طلال کے بیٹے شہزادے ولید بن خالد بن طلال میں 15 سال تک کومہ میں رہنے کے بعد زندگی کے آثار پیدا ہونے کو ڈاکٹروں کی جانب سے ناقابل یقین قدرت کا معجزہ قرار دیا جا رہا ہے کیونکہ اس سے قبل دنیا کے ماہرین ڈاکٹر سعودی شہزادے کو کومہ سے جگا نہیں سکے تھے۔

غیر ملکی میڈیا کی رپورٹس کے مطابق اربوں روپے کی جائیدادوں کے مالک شہزادے ولید بن خالد بن طلال 2005 میں ملٹری کالج سے تعلیم حاصل کرنے کے دوران ایک ٹریفک حادثے کا شکار ہوگئے تھے، ٹریفک حادثے میں سعودی شہزادے کی جان تو بچ گئی تھی لیکن وہ کومہ میں چلے گئے تھے۔

سعودی شہزادے کے لمبے عرصے تک کومہ میں جانے کے بعد انہیں "سویا ہوا شہزادہ” کہا جاتا ہے، انہیں ہوش میں لانے کے لئے دو امریکی اور ایک ہسپانوی ڈاکٹروں پر مشتمل ماہرین ڈاکٹروں کی ٹیم دن رات کوشش کرتی رہی ہے لیکن وہ اپنی ہر کوشش میں ناکام رہے ہیں، تاہم اب اچانک ان کی انگلیوں میں حرکت ہونا شروع ہوگئی ہے۔

سعودی شہزادہ خالد بن ولید بن طلال کی کومہ کے دوران آواز پر ہاتھ کی انگلیاں ہلانے کی ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہو رہی ہے، جس میں ایک خاتون سعودی شہزادے کو اپنی ہاتھ کی انگلیاں ہلانے کے لیے کہتی ہے، جس کا جواب دیتے ہوئے سعودی شہزادہ پہلے اپنے ہاتھ کی دو انگلیاں ہلاتا ہے، اس کے بعد وہ اپنا پورا ہاتھ ہلاتے ہیں۔

سعودی شہزادہ خالد بن ولید بن طلال کی ہاتھ کی انگلیوں میں اچانک پندرہ سال کے بعد حرکت دیکھ کر اس کے اہل خانہ اور ہسپتال کا عملہ دونوں میں ہی خوشی کی لہر دوڑ گئی اور اس بات پر بے حد خوش ہیں کہ سعودی شہزادے میں 15 سال کے بعد زندگی کی امید جاگی ہے۔


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >