سوڈان نے بھی اسرائیل کو تسلیم کرنے پر رضا مندی ظاہر کر دی

ستمبرمیں متحدہ عرب امارات (یو اے ای) اور بحرین نے امریکہ کہ وائٹ ہاؤس میں اسرائیل کے ساتھ امن معاہدے پر دستخط کیے تھے جس کے بعد دونوں ممالک کے اسرائیل کے ساتھ سفارتی تعلقات معمول پر آگئے ہیں۔

اب ایک اسلامی  ملک سوڈان نے بھی اسرائیل کے ساتھ امن معاہدے پر رضا مندی کا اظہار کردیا ہے۔ سوڈان اس حوالے سے بھی ایک اہم ملک ہے کہ ماضی میں یہ اسرائیل کیخلاف برسر پیکار رہا ہے۔ ان دونوں ممالک کے درمیان تعلقات کی بحالی کا اعلان بھی امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ نے وائٹ ہاؤس سے کیا۔

امریکی صدر ٹرمپ نے سوڈان کی سیاسی قیادت اور اسرائیلی وزیراعظم بینجمن نیتن یاہو سے ٹیلی فون پر گفتگو کی اور فون کا لاؤڈ سپیکر کھول کر ساری گفتگو میڈیا کو بھی سنائی۔

دوران گفتگو اسرائیلی وزیراعظم نے کہا کہ ہم آپ کی لیڈرشپ میں امن کا دائرہ وسیع سے وسیع کرتے جارہے ہیں۔ جس پر ڈونلڈ ٹرمپ نے کہا کہ ابھی مزید کئی ممالک اس امن کے دھارے میں آنے والے ہیں۔

ڈپٹی پریس سیکرٹری جڈ ڈیری نے اس بات کی تصدیق کی کہ سوڈان اور اسرائیل نے تعلقات کی بحالی پر سمجھوتہ کرلیا ہے۔ جس کے بعد اسرائیل کے ساتھ سفارتی تعلقات بحال کرنے والے مسلم ممالک کی تعداد 5 ہو جائے گی۔

اس سے قبل مصر، اردن، یو اے ای اور بحرین اسرائیل کے ساتھ اپنے سفارتی تعلقات بحال کر کے اسے تسلیم کر چکے ہیں۔

  • And for its reward.. Sudan is going to out from black list countries…Where is FATF??
    World is controlled by few peoples.. Majority are just slave..Can any one will save Planet Earth population from few bunch of criminals??


  • Featured Content⭐


    24 گھنٹوں کے دوران 🔥


    From Our Blogs in last 24 hours 🔥


    >